1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

حالات حاضرہ

امریکی وزیر خارجہ کا دورہ یوکرائن

امریکی وزیر خارجہ ہلیری کلنٹن نے مشرقی یورپ کے پانچ ملکوں کے دورے کے آغاز پر یوکرائن کی قیادت پر واضح کیا کہ اس کے لئے مغربی دفاعی اتحاد نیٹو میں شمولیت کے دروازے کھلے ہیں۔

default

یوکرائن پہنچ کر امریکی وزیرخارجہ ہلیری کلنٹن نے صدر وکٹوریانوکووِچ کے ساتھ ملاقات کی اور بعد میں ایک مشترکہ پریس کانفرنس سے دونوں لیڈروں نے خطاب کیا۔ امریکی وزیر خارجہ نے اپنے یوکرائنی ہم منصب گریشنکوسے بھی علیحدہ ملاقات کی۔

پریس کانفرنس میں امریکی وزیر خارجہ نے صدر یانوکووچ پر واضح کیا کہ وہ جمہوری اقدار کے ساتھ وابستہ رہیں جو نہایت اہم ہے۔ پریس کانفرنس میں انہوں نے یوکرائن میں ذرائع ابلاغ کی آزادی کے حوالے سے پائی جانے والی تشویش پر اپنے تحفظات کا بھی اظہار کیا۔ اس موقع پر انہوں نے یوکرائن کی قیادت کو بتایا کہ مغربی دفاعی اتحاد نیٹو میں یوکرائن کی شمولیت کے دراوازے کھلے ہیں۔ موجودہ حکومت نے نیٹو میں شمولیت کے سابقہ حکومتی پلان کو رد کردیا ہے۔

Ukraine Außenminister Gryshchenko

یوکرائن کے وزیر خارجہ گریشنکو

اس موقع پر کلنٹن نے واضح کیا کہ واشنگٹن کسی طور پر بھی کیف اور ماسکو کے تعلقات پر اثر انداز نہیں ہونا چاہتا۔ اس مناسبت سے امریکی وزیرخارجہ کا یہ بھی کہنا تھا کہ وہ قوتیں جو یوکرائن کو مجبور کر رہی ہیں کہ وہ روس یا مغرب میں سے کسی ایک کا انتخاب کرے وہ حقیقت میں غلط انتخاب کی بات کرتی ہیں۔

مشترکہ پریس کانفرنس میں امریکی وزیر خارجہ نے یانوکووچ حکومت کی اقتصادی پالیسیوں کی حمایت کرتے ہوئے اس کی انٹرنیشنل مانیٹری فنڈ سے انیس ارب ڈالر کے امداد کے پروگرام کی تعریف بھی کی، جو یوکرائنی اقتصادیات میں بہتری کی خاطر لی جا رہی ہے۔ اس کے علاوہ موجودہ حکومت کی مالیاتی اصلاحات کو بھی استحسانی نگاہوں سے دیکھا۔

NO FLASH Viktor Janukowytsch

یوکرائن کے صدر وکٹوریانوکووِچ

پریس کانفرنس میں کلنٹن نے کیف حکومت کے کاپی رائٹ کے حوالے سے کی جانے والی کوششوں کو بھی سراہا۔ پریس کانفرنس میں امریکی وزیر خارجہ نے روس نواز صدروکٹور یانوکووِچ کی پالیسیوں اور دوسرے معاملات کو تنقید کا نشانہ بنانے سے گریز کیا۔

یہ امر قابل ذکر ہے کہ صدروکٹور یانوکووِچ نے منصب صدارت سنبھالنے کے بعد روس نواز پالیسیوں کو تقویت دیتے ہوئے بحیرہ اسود میں روسی فوجی بیڑے کی مدت میں توسیع کے ساتھ ساتھ تجارتی رابطوں میں اضافہ بھی کیا ہے۔

امریکی وزیر خارجہ نے صدر وکٹور یانوکووِچ کی فروری منعقدہ الیکشن میں کامیابی کی بھی تعریف کرتے ہوئے وہاں جمہوری اقدار کو مستحکم قرار دیا۔

Pk Oppositionspolitikerin Julia Timoschenko NO-FLASH

یوکرائن کی سابقہ خاتون وزیر اعظم یُولیا تیموشَینکو

کلنٹن یوکرائن میں قیام کے دوران صدر یانوکووِچ کی کٹر حریف اور سابق خاتون وزیر اعظم یُولیا تیموشَینکو کے ساتھ بھی ملاقات کریں گی۔ امکاناً اس ملاقات میں یوکرائن کی خاتون لیڈر موجودہ حالات کے بارے میں مختلف تصویر پیش کرسکتی ہیں اور اس کی ایک وجہ ان کو وزارت عظمیٰ کے دفتر کے غلط استعمال کے حوالے سے ممکنہ مقدمے ہو سکتا ہے۔

یوکرائن کے بعد امریکی وزیر خارجہ کی اگلی منزل پولینڈ ہے۔ وہ پولینڈ کے شہر کراکوف، ہفتہ کے روز پہنچ رہی ہیں۔ پولینڈ میں قیام مکمل کر کے کلنٹن جارجیا، آذربائیجان اور آرمینیا بھی جائیں گی۔

رپورٹ: عابد حسین

ادارت: عاطف بلوچ

DW.COM