1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

حالات حاضرہ

امریکی وزیردفاع گیٹس کی اپناعہدہ چھوڑنے کی خواہش

امریکی وزیر دفاع رابرٹ گیٹس نےاس امید کا اظہار کیا ہے کہ وہ سن 2011ء میں اپنے عہدے کو خیر باد کہہ دیں گے۔ دوسری طرف گیٹس کے پریس سیکریٹری نے کہا ہے کہ وزیر دفاع کے اس بیان کو ان کی ریٹائرمنٹ کا اعلان نہ سمجھا جائے۔

default

66 سالہ رابرٹ گیٹس نے پیر کو فارن پالیسی میگزین کو دئے گئے ایک انٹرویو میں کہا کہ سن 2011ء میں ان کا وزیر دفاع کے عہدے سے سبکدوش ہو جانا ایک اچھا وقت ہوگا کیونکہ تب تک معلوم ہو جائے گا کہ افغانستان میں اپنائی گئی حکمت عملی کتنی سود مند ہے۔

گیٹس نے کہا ،’’میرے خیال میں آئندہ برس تک یہ معلوم ہو جائے گا کہ آیا افغانستان میں اپنائی گئی ہماری حکمتِ عملی کامیاب رہی یا نہیں۔ اس وقت تک ہم افغانستان میں موجود فوج کی تعداد میں مزید اضافہ بھی کر چکے ہوں گے اور دسمبر تک ہم اپنی کارراوئیوں کا جائزہ بھی لے چکے ہوں گے۔ میرے خیال میں، سن2011ء کے دوران میرے پاس ایک منطقی موقع ہو گا کہ میں اپنے عہدے سے سبکدوش ہو جاؤں۔‘‘

انٹرویو میں رابرٹ گیٹس کا کہنا تھا کہ یہ مناسب نہیں ہوگا کہ وہ سن 2012ء تک اپنے عہدے پرتعینات رہیں کیونکہ اس سال الیکشن منعقد کئے جا رہے ہوں گے اور موجودہ انتظامیہ کے لئے اس دوران ایک ’مناسب امیدوار‘ کا انتخاب کافی پیچیدہ ہو جائے گا۔

China Besuch US-Verteidigungsminister Donald Rumsfeld p178

سابق امریکی وزیر دفاع ڈونلڈ رمزفیلڈ

چالیس سال کا وسیع تر تجربہ رکھنے والے گیٹس کے ان بیانات کو ان کی ریٹائرمنٹ کا اعلان تصور کیا جا رہا ہے تاہم پینٹاگون نے فارن پالیسی میگزین میں شائع ہونے والے گیٹس کے اس انٹرویو کی اہمیت کو کم کرتے ہوئے کہا ہے کہ یہ ان کی ریٹائرمنٹ کا اعلان مت سمجھا جائے کیونکہ ایسی خواہشات کا اظہار گیٹس ماضی میں بھی کر چکے ہیں۔ پینٹا گون کے ترجمان جیف مورل نے کہا ہے کہ گیٹس نے صرف اپنی خواہش کا اظہار کیا ہے کہ کس وقت وہ اپنی ذمہ داریوں سے الگ ہونا چاہتے ہیں۔

رابرٹ گیٹس افغان جنگ کی منصوبہ بندی میں ایک اہم کردار ادا کر رہے ہیں اور وہ واحد ری پبلکن ہیں جو ڈیموکریٹس کے اقتدار میں آنے کے بعد بھی اپنی پوزیشن پر برقرار رہے۔ امریکی خفیہ ادارے کے سابق ڈائریکٹر گیٹس سن 2006ء میں ڈونلڈ رمز فیلڈ کی جگہ وزیر دفاع کے عہدے پر تعینات کئے گئے تھے۔

پیر کو ہی رابرٹ گیٹس نے اپنے مؤقف کو دہرایا ہے کہ آئندہ جولائی سے افغانستان میں متعین امریکی فوجیوں کے انخلاء کا عمل شروع کر دیا جائے گا۔ اتوار کو افغانستان میں غیر ملکی افواج کے کمانڈر جنرل ڈیوڈ پیٹریاس نے کہا تھا کہ سن2011ء میں وہاں سے امریکی افواج کا انخلاء کوئی لازمی بات نہیں ہے۔ پیٹریاس کے اس بیان کے بعد گیٹس نے لاس اینجلس ٹائمز کو دئے گئے ایک انٹرویو میں کہا کہ اس میں کوئی شک نہیں ہونا چاہئے کہ جولائی سن 2011ء سے واشنگٹن حکومت افغانستان سے اپنے فوجیوں کی واپسی کا عمل شروع کر دے گی۔

رپورٹ: عاطف بلوچ

ادارت: افسر اعوان

DW.COM