1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

حالات حاضرہ

امریکی فوجی امداد کی معطلی، ’وجہ پاکستانی اقدامات‘

وائٹ ہاؤس نے اسلام آباد حکومت کے بعض اقدامات کو پاکستانی فوج کے لیے کروڑوں ڈالر کی امریکی امداد کی معطلی کا سبب قرار دیا ہے۔

default

اتوار کو وائٹ ہاؤس کے چیف آف سٹاف ولیم ڈیلی نے بتایا کہ پاکستانی حکام نے بعض ایسے اقدامات کیے، جن کے باعث امریکہ کو امداد روکنے کی وجہ مل گئی۔ ایک نشریاتی انٹرویو میں ولیم ڈیلی نے تصدیق کی کہ عسکری مقاصد کے لیے پاکستان کو دی جانے والی 800 ملین ڈالر کی امداد روک دی گئی ہے۔ یہ امداد پاکستان کو دفاعی شعبے میں تعاون کے لیے دی جانے والی دو ارب ڈالر کی امداد کا حصہ تھی۔

امریکی وزارت دفاع کے مطابق پاکستانی فوج نے پاکستان متعینہ امریکی فوجی تربیت کاروں کی تعداد میں نمایاں کمی کی درخواست کی تھی۔ یہ بھی بتایا گیا ہے کہ امریکی اہلکاروں کے لیے پاکستانی ویزےکی دستیابی کو بھی محدود کیا گیا ہے۔ پینٹاگون کے مطابق گزشتہ آٹھ ماہ کے واقعات تعلقات میں تناؤ کا سبب بنے ہیں۔ یاد رہے کہ ریمنڈ ڈیوس کا معاملہ بھی اسی عرصے میں پیش آیا تھا۔

پینٹاگون کی جانب سے جاری کیے گئے ایک تحریری بیان کے مطابق، ’’پاکستانی فوجی قیادت کا کہنا ہے کہ یہ ایک عارضی اقدام ہے تاہم ہمارے تربیت کاروں اور دیگر عملے کی کمی کے سبب ہم ایسا تعاون فراہم کرنے سے قاصر ہیں، جو تربیت کے کارآمد ہونے کے لیے ضروری ہے۔‘‘

NO FLASH Pakistan USA Militär Übung Manöver

پاکستانی اور امریکی فوجیوں کی ایک مشترکہ تربیتی مشق کا منظر

امریکی جریدے نیو یارک ٹائمز نے موجودہ ویک اینڈ پر انکشاف کیا تھا کہ پاکستان نے اپنی نیم فوجی فورس فرنٹیئر کانسٹیبلری کی تربیت پر مامور ایک سو امریکی ماہرین کو فارغ کر دیا ہے۔ اخبار نے یہ بھی انکشاف کیا کہ پاکستانی حکام نے وہ اڈہ بھی بند کرنے کی دھمکی دے رکھی ہے، جہاں سے امریکی خفیہ ادارے سی آئی اے کے اہلکار ڈرون حملوں کا انتظام سنبھالتے ہیں۔

حالیہ اقدام کے بعد انسداد دہشت گردی کے ضمن میں امریکہ کے اپنے اہم اتحادی ملک پاکستان کے ساتھ تعلقات میں تناؤ بڑھتا دکھائی دے رہا ہے۔ دو مئی کو پاکستان کے شہر ایبٹ آباد میں اسامہ بن لادن کی ہلاکت اور قبائلی علاقوں میں مسلسل ڈرون حملوں کے سبب اسلام آباد کی بھی واشنگٹن سے ناراضگی بڑھ رہی ہے۔

امریکی محکمہ ء خارجہ نے صورتحال سے متعلق وضاحت کرتے ہوئے ایک بیان میں واضح کیا ہے کہ امریکہ پاکستان کے ساتھ طویل المدتی اور رواں حالات کو انتہائی گہری نگاہ سے دیکھ رہا ہے۔

رپورٹ: شادی خان سیف

ادارت: مقبول ملک

DW.COM

ویب لنکس