1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

حالات حاضرہ

امریکی صدارتی انتخابات

ریپبلکن امیدوار مک کین کا دعوی ہے کہ انتخابات میں ان کی فتح یقینی ہے جب کہ باراک اوباما کا یہ کہنا ہے کہ مک کین صدر بش کے سیاسی نظریات کے پیروکار ہیں۔

default

امریکی صدارتی مہم اس وقت اپنے بام اوج پر ہے۔ ڈیمو کریٹس اور ریپبلکنز، دونوں ہی اطراف سے ایک دوسرے پر سیاسی الزامات اور ووٹروں کو اپنی جانب راغب کرنے کے لئے دعوں اور وعدوں کا بھرپور سہارا لیا جا رہا ہے۔ رائے عامہ ہموار کرنے کے لئے نشریاتی اداروں پر بھرپور انتخابی مہم جاری ہے۔

BdT Obama und McCain

امریکی ریپبلکن صدارتی امیداوار جان مک کین نے دعویٰ کیا ہے کہ انتخابات میں ان کی فتح یقینی ہے۔ دوسری جانب ڈیموکریٹ باراک اوباما کا کہنا ہے کہ بش اور مک کین کے سیاسی نظریات ایک ہی ہیں۔ امریکی ٹی وی چینل پر انٹرویو دیتے ہوئے ریپبلکن صدارتی امیدوار جان مک کین نے کہاکہ چار نومبر کے انتخابات میں وہ فاتح ہوں گے۔

ان کا کہنا تھا کہ امریکی عوام خدشات کا شکار ہے اور ایسی نازک صورت حال میں عوام ایک بہتر مستقبل چاہتے ہیں، اس لئے آئندہ چند روز میں ریپبلکن بھرپورعوامی حمایت حاصل کرنے کی کوشش کرے گی تاہم ان کا یہ بھی کہنا تھا کہ عراق جنگ پر مخالفت کی وجہ سے انہیں اپنی پارٹی کی طرف سے تنقید کا سامنا کرنا پڑا۔

BdT Wachsfiguren McCain und Obama



دوسری جانب ریاست کولوراڈو میں ڈیموکریٹ صدارتی امیدوار باراک اوباما نے انتخابی ریلی سے خطاب میں کہا کہ جان مکین صدربش کی ناکام معاشی پالیسیوں کو جاری رکھنا چاہتے ہیں جو امریکہ کے مستقبل کے لئے مہلک ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ بش اور مک کین کے سیاسی نظریات میں کوئی فرق نہیں اور آٹھ سالہ بش دور حکومت کی پالیسیوں نے امریکہ کو غلط راستے پر گامزن کردیا ہے۔

3. TV-Debatte zwischen Obama und McCain in Hempstead

امریکا میں مختلف اداروں کی جانب سے جاری کردہ سروے رپورٹوں اور جائزوں میں ابھی تک باراک اوباما کو برتری حاصل ہے۔ مختلف جائزہ رپورٹوں میں یہ برتری زیادہ یا کم تو ہے مگر بہرحال ہے باراک اوباما کے حق میں ہی۔

جائزوں میں واضع طور پر امریکی صدارتی امیدوار باراک اوباما اپنے حریف مک کین سے پانچ پوائنٹس سے لے کر بارہ پوائنٹس تک کی برتری لئے ہوئے ہیں۔ امریکہ میں ان دنوں نشریاتی اور دوسرے مختلف ادارے روزانہ کی بنیاد پر سروے رپورٹیں اور جائزے نشر کر رہے ہیں۔