1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

معاشرہ

امریکی شہری آزاد کر دیے جائیں گے، ایرانی صدر

ایرانی صدر نے کہا ہے کہ گرفتار کیے گئے دو امریکی شہریوں کو جلد ہی رہا کر دیا جائے گا۔ ایران کی ایک عدالت نے ان امریکیوں کو جاسوسی کا مرتکب پایا جبکہ ان افراد کا کہنا ہے کہ وہ غلطی سے ایران کی قومی سرحد پار کر گئے تھے۔

default

شین بویئر، بائیں اور جوش فیٹل، دائیں

ایرانی صدر محمود احمدی نژاد نے امریکی اخبار واشنگٹن پوسٹ کو بتایا ہے کہ وہ بذات خود ان امریکی باشندوں کی رہائی کے لیے کوشش کر رہے ہیں، ’میں ان دونوں کی رہائی کے لیے معاونت کر رہا ہوں۔  دو دنوں میں یہ اپنے گھر واپس جانے کے قابل ہو جائیں گے‘۔

ایرانی صدر نے کہا ہے کہ تہران حکومت یکطرفہ طور پر انسانی ہمدردی کی بنیادوں پر ان دونوں کو رہا کر رہی ہے۔ امریکی ٹی وی نیٹ ورک این بی سی نیوز کے ساتھ ایک علٰیحدہ انٹرویو میں احمدی نژاد  نے کہا کہ امریکی شہریوں جوش فیٹل اور شین بویئر کو دو دن بعد رہا کر دیا جائے گا۔

Flash-Galerie Mahmud Ahmadinedschad

ایرانی صدر محمود احمدی نژاد

ایرانی صدر احمدی نژاد نے البتہ کہا کہ ان افراد کی رہائی سے امریکہ اور ایران کے تعلقات میں بہتری کے امکانات انتہائی کم ہیں۔ این بی سی کے پروگرام ’ٹو ڈے شو‘ میں انٹرویو دیتے ہوئے احمدی نژاد نے کہا، ’آپ جانتے ہیں کہ اس وقت امریکی جیلوں میں کتنے ایرانی قید ہیں‘۔

ایران میں ان امریکیوں کے وکیل مسعود شافی نے بتایا ہے کہ عدالت نے ان کی رہائی کے لیے پانچ پانچ لاکھ امریکی ڈالر کا زر ضمانت مقرر کیا تھا اور یہ رقوم جمع کروانے کے بعد انہیں رہا کر دیا جائے گا۔ مسعود شافی نے خبر رساں ادارے اے ایف پی کو بتایا کہ عدالت نے انہیں اس حوالے سے باضابطہ طور پر باخبر کر دیا ہے۔

دریں اثناء امریکی وزیر خارجہ ہلیری کلنٹن نے کہا ہے کہ وہ ایرانی حکومت کے اس فیصلے کا بغور جائزہ لے رہی ہیں، ’تہران حکومت نے دونوں امریکیوں کی رہائی کے حوالے سے جو فیصلہ کیا ہے، واشنگٹن حکومت اس کا خیر مقدم کرتی ہے‘۔

Die US Touristin Sarah Shourd

امریکی شہری سارا شرود

شین بویئر، جوش فیٹل اور ان کی ایک خاتون ساتھی سارا شرود کو 31 جولائی 2009ء کو اس وقت گرفتار کیا گیا تھا، جب یہ لوگ عراق کے ساتھ ایرانی سرحد پار کر کے ایران میں داخل ہوئے تھے۔ تہران حکومت کا کہنا ہے کہ یہ افراد ایران میں جاسوسی کی غرض سے آئے تھے جبکہ ان تینوں امریکیوں کا کہنا ہے کہ وہ کوہ پیمائی کرتے ہوئے غلطی سے ایران میں داخل ہو گئے تھے۔

سارا شرود کو پانچ لاکھ امریکی ڈالر کے زر ضمانت کے عوض ستمبر 2009ء میں رہا کر دیا گیا تھا۔ تاہم عدالت نے رواں ماہ ہی جوش فیٹل اور شین بویئر کو غیر قانونی طور پر ایران میں داخل ہونے اور جاسوسی کے الزام میں آٹھ آٹھ سال کی سزائے قید سنائی تھی۔

رپورٹ: عاطف بلوچ

ادارت: مقبول ملک

DW.COM

ویب لنکس