1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

حالات حاضرہ

امریکی اتحادی افواج کے الرقہ پر حملے، بیالیس شہری ہلاک

شام میں ایک مانیٹری گروپ کا کہنا ہے کہ جہادی تنظیم اسلامک اسٹیٹ کے نام نہاد دارالخلافہ شامی شہر  الرقہ میں امریکا کے زیر قیادت اتحاد کی جانب سے کیے گئے فضائی حملوں میں بیالیس عام شہری ہلاک ہوگئے ہیں۔

Syrien Krieg - Luftangriff in Damaskus (picture-alliance/Anadolu Agency/A. Al-Bushy)

آبزرویٹری کے مطابق امریکی اتحادی فوج کے طیاروں نے السخانی اور البادو سمیت آس پاس کے متعدد علاقوں پر شدید گولہ باری کی ہے

شام کے حالات پر نگاہ رکھنے والی تنظیم سیریئن آبزرویٹری فار ہیومن رائٹس کے مطابق ہلاک ہونے والوں میں انیس بچے اور بارہ خواتین بھی شامل ہیں۔ 

اس برطانوی واچ ڈاگ کے مطابق چودہ اگست سے اب تک ہلاک ہونے والوں عام شہریوں کی تعداد 167 سے تجاوز کر گئی ہے۔

اسلامک اسٹیٹ یا ‘داعش‘  کے خبر رساں ادارے عماق کے مطابق اتوار کے روز  البادو کے علاقے میں ایک رہائشی عمارت پر فضائی حملے میں 40 شہری ہلاک ہوئے تھے۔ ان فضائی حملوں نے متعدد عام شہریوں کو اسلامک اسٹیٹ کے زیر تسلط اس علاقے سے نکلنے پر مجبور کردیا ہے ۔

امریکی حمایت یافتہ سیرین ڈیموکریٹک فورسز  نے چھ  جون کو داعش کے زیر قبضہ اس اہم علاقے کا کنٹرول دوبارہ حاصل کرنے کے لیے جنگی آپریشن کا آغاز کیا تھا۔ اس طرح اب تک امریکی حمایت یافتہ جنگجو متعدد علاقوں پر قبضہ کر چکے ہیں۔

 امریکا اور اس کی اتحادی فورسز کے مطابق کرد باغیوں اور سنی قبائل پر مشتمل سیرین ڈیموکریٹک فورسز کا گروپ شام میں داعش کے خلاف سب سے مؤثر گروپ ثابت ہو رہا ہے۔

 

DW.COM