1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

حالات حاضرہ

امریکہ میں ڈسکوری چینل دہشت گردانہ کارروائی کا نشانہ

امریکی دارالحکومت واشنگٹن کے نواح میں میں واقع سائنسی ایجادات و دریافتوں کے پروگرام پیش کرنے والے ٹیلی وژن چینل’’ ڈسکوری‘‘ کی عمارت میں گھسنے والے دہشت گرد کو پولیس نے ہلاک کردینے کی تصدیق کردی ہے۔

default

امریکی پولیس

ڈسکوری ٹیلی وژن چینل کے صدر دفتر میں ملازمین کو یرغمال بنانے والے مسلح شخص کو پولیس نےکمانڈو کارروائی میں ہلاک کر کے تین یرغمالی ملازمین کو رہا کروا لیا ہے۔ عمارت میں چار گھنٹے تک سنسنی خیز ڈرامائی صورت حال کی وجہ سے خوف و ہراس کی کیفیت پائی جاتی تھی۔ مسلح شخص کو مارنے کی تصدیق کرتے ہوئے منٹگمری کاؤنٹی کے پولیس چیف جے تھامس مانگر نے بتایا کے ان کی ٹیکٹیکل یونٹ کو یہ کارروائی اس وقت کرنا پڑ جب اغوا کار نے ایک ملازمین پر ہینڈ گن تان لی تھی۔ مانگر کے مطابق مسلح شخص سے دو گھنٹے تک مذاکرات بھی کئے گئے جو بظاہر ناکام رہے۔

مقامی میڈیا نے مسلح شخص کا نام جیمز جے لی کے طور شناخت کیا ہے اور مزید یہ کہا کہ وہ ڈسکوری چینل کے مختلف پروگراموں کے خلاف احتجاجات بھی کرتا رہا ہے۔ منٹگمری پولیس چیف نے بہ بھی بتایا کہ اس شخص کو کچھ عرصہ قبل گرفتار بھی کیا گیا تھا۔

امریکہ میں عوامی رویہ ایک بار پھر دہشت گردانہ کارروائی سے متاثر دکھائی دیتا ہے۔ حکام کے

Terrorwarnung in USA

امریکی پولیس ایک سڑک پر الرٹ

مطابق ایک مسلح شخص نے ڈسکوری چینل کی عمارت میں داخل ہو کر کچھ لوگوں کو یرغمال بنا رکھا ہے۔ مونٹگمری کاؤنٹی میں پولیس کے سربراہ جے تھامس مانگر نے میڈیا کو بتایا کہ مسلح شخص سے مذاکراتی عمل جاری ہے۔ اندازے لگائے جا رہے ہیں کہ اغوا کار نے کئی بارودی پٹیاں بھی اپنے جسم پر چسپاں کر رکھی ہیں۔ بعض حوالوں میں اس کو ایشیائی نژاد بھی قرار دیا گیا ہے۔

ڈسکوری چینل کی عمارت واشنگٹن کے قریب ریاست میری لینڈ کے مقام سلور سپرنگ میں واقع ہے۔ تمام اہم قریبی سڑکیں کسی بھی ہنگامی صورت حال یا آپریشن کے تناظر میں بند کر دی گئی تھیں۔ پولیس کی بڑی نفری بھی عمارت کے چاروں طرف موجودتعینات کردی گئی تھی۔

اس سے قبل پولیس حکام نے اس امر کی تصدیق نہیں کر سکے تھے کہ مشتبہ مسلح شخص نے ڈسکوری ٹیلی وژن کے صدر دفتر میں داخل ہونے کے بعد کوئی فائرنگ کی یا نہیں۔ اس ٹیلی وژن چینل کے ملازمین نے البتہ بتایا ہے کہ انہوں نے فائرنگ کی آوازیں سنی ہیں۔ مقامی میڈیا کا یہ بھی کہنا ہے کہ ٹیلی وژن کی عمارت کے اندر ایک ایمبولینس کو بھی جاتے دیکھا گیاتھا۔

آخری کارروائی سے قبل کلوز سرکٹ ٹیلی وژن کیمروں سے پولیس اور جرائم کی تحقیقات کرنے والے ماہرین اس مشتبہ مسلح شخص کا نفسیاتی مشاہدہ جاری رکھا۔ اس عمارت کے اندر موجود ملازمین انٹرنیٹ ویب سائٹ ٹویٹر پر صورت حال کے اپ ڈیٹ مسلسل پوسٹ کر تےرہے۔

دنیا بھر میں ڈسکوری چینل کے ناطرین کی تعداد ڈیڑھ ارب کے قریب ہے۔ یہ ادارہ 180 ملکوں میں اپنی نشریات کیبل کے ذریعے دکھاتا ہے۔ اس چینل سے کئی دوسرے سائنسی پروڈکشن ادارے بھی وابستہ ہیں۔

رپورٹ: عابد حسین

ادارت: مقبول ملک

DW.COM

ویب لنکس