1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

حالات حاضرہ

امریکہ میں چینی ٹائروں پر نئی ڈیوٹی، بیجنگ کا احتجاج

بیجنگ انتظامیہ نے واشنگٹن حکومت کی جانب سے امریکہ میں چینی برآمدات، خاص طور سے ٹائروں پر لگائی گئی نئی ڈیوٹی کے باعث دونوں ملکوں کے باہمی تعلقات میں کچھاؤ کے خدشے کا اظہار کیا ہے۔

default

چینی حکام کے اس خدشے کے وجہ گزشتہ ہفتے امریکی حکومت کی جانب سے چین میں تیار کردہ ٹائروں پر نئے محصولات کا نفاذ ہے۔ واشنگٹن کے اس فیصلے کے خلاف چین نے عالمی ادارہء تجارت کے پاس اپنی باقاعدہ شکایت بھی درج کروا دی ہے۔ امریکی موقف یہ ہے کہ چین سے درآمد کردہ ٹائروں پر لگائے گئے محصولات WTO کے قوانین کے عین مطابق ہیں۔

Barack Obama in Cairo

امریکی صدر اوباما

چینی نائب وزیر خارجہ ہی یافے نے واشنگٹن انتظامیہ پر عالمی تجارتی تنظیم کے قوانین کو ناجائز استعمال کرنے کا الزام عائد کرتے ہوئے کہا ہے کہ اس طرح کے امریکی اقدامات سے بیجنگ اور واشنگٹن کے تجارتی تعلقات میں کشیدگی کا امکان ہے۔ انہوں نے چینی صدر ہو جن تاؤ کو اس معاملے پر بریفنگ دیتے ہوئے کہا کہ امریکہ کے یہ اقتصادی حفاظتی اقدامات عالمی مالیاتی بحران سے نکلنے کی کوششوں کو بھی نقصان پہنچا سکتے ہیں۔ چینی صدر آئندہ ہفتے امریکی شہر پٹسبرگ میں بیس کے گروپ G20 کی سربراہی کانفرنس میں شرکت کرنے والے ہیں۔

امریکی صدر باراک اوباما نے ملک میں ٹائروں کی تیاری کی صنعت کے پانچ ہزار ملازمین کے ان کی ملازمتوں سے محروم ہو جانے کے خدشے کے پیش نظر گزشتہ ہفتے اس شعبے میں چین سے درآمدات پر 35 فیصد نئی ڈیوٹی عائد کردی تھی۔ چینی وزارت تجارت کے ایک ترجمان نے کہا کہ عالمی مالیاتی بحران دراصل امریکہ ہی سے شروع ہوا تھا، اس لئے واشنگٹن انتظامیہ کو چینی برآمدات پر نئی ڈیوٹی لگانے اور مختلف طرح کے اقتصادی حفاظتی اقدامات کرنے سے گریز کرنا چاہئے۔

چینی حکام نے اپنے ملک سے برآمدات کے باعث امریکہ میں ہزاروں ملازمتوں کے ممکنہ طور پر ختم ہو جانے کے خدشات کے جواب میں ایسے اعداد و شمار بھی جاری کئے ہیں، جن کے مطابق چینی ٹائروں کی امریکی منڈیوں کو برآمد میں سال رواں کی پہلی ششماہی کے دوران 15 فیصد کمی ریکارڈ کی گئی۔

رپورٹ: انعام حسن

ادارت: مقبول ملک