1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

حالات حاضرہ

امریکہ میں فائرنگ: چھ ہلاک، رکنِ کانگریس زخمی

امریکی کانگریس کی ایک خاتون رکن سر میں گولی لگنے سے شدید زخمی ہوگئی ہیں۔ ریاست ایریزونا کے شہر ٹوسون میں ایک مسلح شخص کی بلا اشتعال فائرنگ کے نتیجے میں ایک وفاقی جج سمیت کم از کم چھ افراد ہلاک بھی ہوئے ہیں۔

default

رکن کانگریس گبریل گیفورڈز

علاقائی پولیس سربراہ رِچ کیسٹیگر نے ایک نیوز کانفرنس میں بتایا کہ ڈیموکریٹک جماعت سے تعلق رکھنے والی 40 سالہ خاتون رکن کانگریس گبریل گیفورڈز ٹوسون کے ایک شاپنگ سینٹر میں مقامی لوگوں سے ملاقات کررہی تھیں، جب ایک شخص نے وہاں فائرنگ کردی۔

ہلاک شدگان میں ایک وفاقی جج جان رول کے علاوہ ایک نو سالہ بچی بھی شامل ہے۔ فائرنگ کے نتیجے میں 17 افراد زخمی بھی ہیں۔

ڈاکٹروں کے مطابق گبریل گیفورڈز کی حالت تشویشناک ہے۔ گیفورڈز کی سرجری کرنے والے ڈاکٹر کے مطابق ایک گولی ان کے سر کے آرپار ہوگئی تھی، تاہم آپریشن کے بعد ان کی زندگی کی امید بڑھ گئی ہے۔

Barack Obama / USA

امریکی صدر باراک اوباما

اسی ہسپتال میں 10 لوگوں کو طبی امداد کے لیے لایا گیا، جن میں پانچ کی حالت تشویشناک بتائی جارہی ہے۔

فائرنگ کرنے والا 22 سالہ شخص پولیس کی حراست میں ہے۔ اے بی سی ٹیلی وژن نے حملہ آور کا نام جیرڈ لی لوغنر بتایا ہے۔ ٹیل وژن کے مطابق اس شخص نے ویڈیو شیئرنگ ویب سائٹ یو ٹیوب پر کافی تعداد میں حکومت مخالف جذبات پر مبنی ویڈیوزاپ لوڈ کررکھی ہیں۔

امریکی صدر باراک اوباما نے اس واقعے کی مذمت کرتے ہوئے اسے ایک المیے سے بھی بڑا واقعہ قرار دیا ہے۔ انہوں نے کہا، ’یہ ایریزونا کے لیے دکھ ایک گھڑی ہے اور ہمارے پورے ملک کے لیے ایک المیہ ہے۔‘

باراک اوباما کے مطابق وفاقی حکومت اس واقعے کی تحقیقات کے لیے بھرپور تعاون کرے گی اور امریکی تفتیشی ادارے ایف بی آئی کے ڈائریکٹر رابرٹ موئلر ٹوسون پہنچ گئے ہیں۔

رپورٹ: افسراعوان

ادارت: ندیم گِل

DW.COM

ویب لنکس