1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

حالات حاضرہ

امریکہ میں طوفانی جھکڑ، ہلاکتوں کی تعداد 116

امریکی ریاست میسوری میں اتوار کی شب آنے والے طوفانی جھکڑ کے باعث ہلاکتوں کی تعداد 116 تک پہنچ گئی ہے۔ 1947 کے بعد امریکی تاریخ کے اس جان لیوا ترین بگولے کے باعث 400 کے قریب افراد زخمی بھی ہیں۔

default

امریکی ریاست میسوری کے ایک وسطی شہر جوپلن Joplin میں اتوار کی شب آنے والے اس طوفانی جھکڑ کی بدولت ہزاروں گھروں اور کاروباری عمارات کو شدید نقصان پہنچا۔ متاثر ہونے والی عمارتوں میں ایک ہسپتال بھی شامل ہے، جس کی چھت اس طوفانی بگولے کے باعث اڑ گئی۔

امریکی محمکہ موسمیات کے مطابق قریب 50 ہزار کی آبادی والے اس شہر سے ٹکرانے والا طوفانی بگولا 1947 کے بعد سے امریکی تاریخ کا خوفناک ترین واحد بگولا تھا۔ اس کے علاوہ اسے امریکی تاریخ کا نواں جان لیوا ترین بگولا بھی قرار دیا گیا ہے۔

طوفانی جھکڑ کی بدولت ہزاروں گھروں اور کاروباری عمارات کو شدید نقصان پہنچا

طوفانی جھکڑ کی بدولت ہزاروں گھروں اور کاروباری عمارات کو شدید نقصان پہنچا

حکام کی طرف سے پیر کے روز بتایا گیا کہ اس طوفان کی بدولت 116 افراد ہلاک ہوئے ہیں، جبکہ 400 کے قریب زخمی ہیں۔ میسوری کے گورنر جے نکسن نے جوپلن میں میڈیا کو بتایا کہ اس طوفان میں پھنسنے والے سات لوگوں کو بچا لیا گیا ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ امدادی عملے نے پیر کے روز بھی طوفان بادوباراں کے دوران تلاش اور بچاؤ کی مہم جاری رکھی۔ گورنر کا مزید کہنا تھا: ’’ہمیں ابھی بھی یقین ہے کہ لوگ ملبے تلے دبے ہوئے ہیں اور ہم ان تک پہنچنے کے لیے سر توڑ کوشش کر رہے ہیں۔‘‘

حکام کے مطابق شدید طوفان کی بدولت بجلی کا نظام درہم برہم ہوگیا ہے، گیس پائپ لائنز میں آگ لگنے کے واقعات ہوئے، جبکہ 17 موبائل فون ٹاورز اکھڑنے کی بدولت رابطوں کا سلسلہ بھی متاثر ہے۔ ایک مقامی اہلکار مارک بریجز کے مطابق شہر کے کاروباری علاقے میں موجود ریستورانوں کے قریب بہت سے ہلاک شدگان کی لاشیں ملی ہیں۔ جس وقت طوفانی بگولا جوپلن سے ٹکرایا، یہ افراد وہاں رات کا کھانا کھا رہے تھے۔

رپورٹ: افسر اعوان

ادارت: کِشور مُصطفٰی

DW.COM

ویب لنکس