1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

معاشرہ

امریکہ عالمی معیشت پر حاوی ہونے کی کوشش سے باز رہے، ولادی میر پوٹن

روسی وزیراعظم ولادی میر پوٹن نے امریکہ کو عالمی اقتصادیات کے لیے ایک خطرہ قرار دیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ امریکہ اپنے اخراجات پورے کرنے کے لیے عالمی معاشی وسائل استعمال کر رہا ہے۔

default

ڈالز کی اجارہ داری عالمی معیشت کے لیے ایک مسئلہ ہے،ولادی میر پوٹن

روسی وزیراعظم ولادی میر پوٹن نے حکومت کے حامی نوجوانوں کے ایک گروپ سے خطاب کرتے ہوئےکہا کہ امریکہ اپنے وسائل کواستعمال نہیں کر رہا اور اپنے مسائل کو حل کرنے کے لیے دیگر ممالک کا سہارا لیتا ہے اور اپنا بوجھ عالمی معیشت کو منتقل کر دیتا ہے۔ ولادی میر پوٹن نے نوجوانوں کے سمر کیمپ کا دورہ کرتے ہوئے مزید کہا کہ امریکہ عالمی اقتصادیات سے ایک کیڑے کی طرح چمٹ کر اسے چوس رہا ہے۔ اس کی ایک بڑی وجہ ڈالر کی اجارہ داری ہے۔

Russland Dmitri Medwedew und Wladimir Putin in Moskau

امریکہ سے تعلقات کے حوالے سے میدویدیف اور پوٹن کی پالیسی میں فرق ہے

ابھی حال ہی میں امریکہ میں ریاستی قرضوں کی شرح میں اضافے کے حوالے سے ڈیموکریٹس اور ریپبلکن کے مابین اتفاق رائے ہوگیا ہے۔ اس سمجھوتے کی وجہ سے ایک جانب تو بین الاقوامی منڈی نے سکون کا سانس لیا ہے لیکن ابھی بھی غیر یقینی کے بادل منڈلا رہے ہیں۔ اس حوالے سے روسی وزیراعظم کا کہنا تھا ’’خدا کا شکر ہےکہ انہوں نے دانشمندی اور ذمہ داری کا مظاہرہ کرتے ہوئے ایک متوازن فیصلہ کیا۔ ولادی میر پوٹن اس سے قبل بھی امریکی معاشی پالیسی پر تنقید کرتے رہے ہیں۔ تاہم اس موقع پرانہوں نے بتایا کہ روس کے پاس بھی امریکی بانڈز اور قابل قدر دستاویزات بڑی تعداد مں موجود ہیں۔

روسی نوجوانوں کو مخاطب کرتے ہوئے پوٹن کا کہنا تھا ’’ اگر امریکی نظام میں کچھ خرابی آتی ہے تو سب اس سے متاثر ہوں گے‘‘۔ ولادی میر پوٹن کے 2000ء سے 2008ء کے دور اقتدار کے دوران روس اور امریکہ کے تعلقات میں کوئی خاص خوشگواری نہیں تھی۔ تاہم موجودہ روسی صدر دیمتری میدویدف نے دونوں ممالک کے مابین باہمی تعلقات کو فروغ دینے کی خواہش کا اظہار کرتے رہے ہیں۔

رپورٹ: عدنان اسحاق

ادارت: کشور مصطفی

DW.COM