1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

حالات حاضرہ

امریکا: دو افراد کا قتل، چھ زخمی

امریکی ریاست میسا چوسٹس میں ایک حملہ آور نے چاقو سے وار کرتے ہوئے کم از کم دو افراد کو قتل کر دیا ہے، جبکہ چھ افراد زخمی بھی ہوئے ہیں۔ دریں اثناء ایک آف ڈیوٹی افسر نے حملہ آور کو گولی مار کر ہلاک کر دیا ہے۔

امریکی ریاست میسا چوسٹس سے ملنے والی اطلاعات کے مطابق پرتشدد واقعات کا سلسلہ اس وقت شروع ہوا، جب اٹھائیس سالہ امریکی شہری آرتھر داروسا نے جان بوجھ کر اپنی کار کو ایک ٹرک سے ٹکرا دیا۔ بتایا گیا ہے کہ بوسٹن کے جنوبی علاقے ٹاؤنٹن میں یہ واقعہ منگل کے روز مقامی وقت کے مطابق شام سات بجے کے قریب پیش آیا۔

اس کے بعد حملہ آور ایک گھر میں داخل ہو گیا، جہاں اس نے دو خواتین کو چاقو سے وار کرتے ہوئے زخمی کر دیا۔ اس واقعے میں ایک اسی سالہ خاتون موقع پر ہی ہلاک ہو گئی جبکہ وہاں پر موجود اُس کی بیٹی شدید زخمی ہے۔ مقامی پولیس نے شدید زخمی ہونے والی خاتون سے متعلق مزید معلومات فراہم نہیں کی ہیں تاہم یہ ضرور کہا گیا ہے کہ اس کی حالت تشویش ناک ہے۔

اس کے بعد حملہ آور ایک کار کے ذریعے شہر کے سیلور سٹی نامی شاپنگ مال تک پہنچا، جہاں اس نے کار وہاں ایک دکان کے شیشے سے ٹکرا دی۔

پولیس کے مطابق اس کے بعد حملہ آور کار سے اترا اور وہاں موجود ایک ریستوران میں داخل ہو گیا، جہاں اس نے مزید چار افراد کو چاقو سے وار کرتے ہوئے زخمی کر دیا۔ اس واقعے میں بھی زخمی ہونے والا ایک چھپن سالہ شخص دم توڑ گیا ہے۔

مقامی میڈیا نے عینی شاہدین کا حوالہ دیتے ہوئے لکھا ہے کہ زخمیوں میں ایک ایسی خاتون بھی شامل ہے، جو حاملہ تھی اور اس کے پیٹ میں چاقو گھونپا گیا ہے۔

ریستوران میں ایک آف ڈیوٹی افسر بھی موجود تھا، جس نے حملہ آور کو گولی مار دی۔ پولیس کے مطابق انہوں نے اس واقعے کی چھان بین شروع کر دی ہے اور فی الحال یہ معلوم نہیں کہ حملہ آور نے ایسا کیوں کیا ہے۔

حالیہ کچھ عرصے سے امریکا میں پے در پے ایسے واقعات رونما ہو رہے ہیں، جن میں کسی واحد فرد کی طرف سے فائرنگ کرتے ہوئے دیگر شہریوں کو ہلاک کر دیا جاتا ہے۔ انہی واقعات کی وجہ سے امریکا میں اسلحہ رکھنے یا نہ رکھنے سے متعلق بحث جاری ہے۔