1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

معاشرہ

افغان مشن کہاں جا رہاہے، جرمن مارشل فنڈ کا سروے

جرمن مارشل فنڈ کے تازہ سروے میں یہ بات سامنے آئی ہے کہ افغانستان میں جاری جنگ کے حوالے سے مغربی ممالک کے موقف میں نا امیدی کا عنصر دکھائی دیتا ہے۔ تاہم امریکہ ابھی تک افغانستان میں استحکام کے حوالے سے بہت پر امید ہے۔

default

جرمن مارشل فنڈ کا دفتر امریکی دارالحکومت واشنگٹن میں قائم ہے۔ سروے کے بعد مرتب کی جانے والی رپورٹ میں یہ بھی بتایا گیا ہے کہ یورپ امریکہ کے مقابلے میں قدرے مایوسی کا شکار ہے۔ اس سروے میں ایرانی جوہری پروگرام کے بارے میں بھی مجموعی طور پر دونوں براعظموں کی سوچ منقسم ہے۔

NATO Soldaten in Afghanistan

طالبان افغانستان کے مختلف علاقوں میں مسلسل حملے کرتے ہیں

بحر اوقیانوس کے آرپار کے ممالک کے درمیان تعلقات پر نظر رکھنے والے ادارے کی سالانہ سروے رپورٹ سینئر ریسرچ فیلو Constanze Stelzenmueller نے نیوز بریفنگ میں پیش کرتے ہوئے بتایا کہ افغانستان میں سلامتی کی صورتحال اور جاری جنگ کے حوالے سے اکاون فیصد امریکیوں کا خیال ہے کہ اگلے برسوں کے دوران افغانستان میں انتہاپسندی کا خاتمہ ہونے کے بعد معمول کی صورت حال سامنے آ جائے گی اور وہاں کے داخلی حالات مستحکم ہوجائیں گے۔ 2009ء میں یہ تعداد 56 فیصد تھی۔

دوسری جانب یورپی عوام اس حوالے سے کہتے ہیں کہ افغانستان میں حالات مزید خراب ہو سکتے ہیں۔ صرف 23 فیصد لوگ ایسے ہیں، جو امریکی لوگوں جیسی رائے رکھتے ہیں۔ اگر گزشتہ سال سے موازانہ کیا جائے تو یہ تعداد مزید کم ہو گئی ہے کیونکہ 2009ء میں بتیس فیصد یورپی افغان صورت حال میں بہتری کی توقع رکھتے تھے۔

اس تناظر میں جرمن مارشل فنڈ نے گیارہ یورپی ملکوں کا تفصیل سے جائزہ پیش کیا ہے۔ مختلف ملکوں میں مختلف آراء سامنے آئی ہیں۔ چونتیس فیصد برطانوی باشندوں نے صورت حال میں مثبت تبدیلی کا اظہار کیا ہے۔ فرانس کے اٹھارہ فیصد شہری اور دس فیصد جرمن، افغانستان میں حالات کی بہتری پر یقین رکھتے ہیں۔

زیادہ تر یورپی افغانستان سے فوجوں کے انخلاء میں دلچسپی رکھتے ہیں۔ اسی طرح ایرانی جوہری پروگرام پر بھی یورپی اور امریکی عوام کی رائے ایک سی نہیں ہے۔ سروے میں شامل 86 فیصد امریکیوں اور 79 فیصد پورپی باشندوں نے ایران کے جوہری پروگرام کے حوالے سے تشویش کا اظہار کیا ہے۔ تاہم اس تنازعے کو کس طرح سے حل کیا جائے اس بارےمیں دونوں براعظوں کے باشندوں کی رائے ایک دوسرے سے مختلف ہے۔

ein Jahr Obama Flash-Galerie

افغانستان میں تعینات غیرملکی فوجیوں میں سب سے زیادہ امریکی ہیں

جرمن مارشل فنڈ کے اس سروے میں امریکہ، جرمنی، فرانس، برطانیہ، بلغاریہ، رومانیہ، اٹلی، ہالینڈ، پولینڈ، پرتگال، سپین اور ترکی کے باشندوں سے سوال پوچھے گئے تھے۔

جرمن مارشل فنڈ امریکہ میں قائم ایک غیر جانبدار بین الاقوامی ادارہ ہے، جس کا مقصد یورپ اور امریکہ کے درمیان دو طرفہ تعلقات کو فروغ دینا اور اہم معاملات میں ہم آہنگی پیدا کرنا ہے۔

رپورٹ: عدنان اسحاق

ادارت : ندیم گِل