1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

حالات حاضرہ

افغان جنگ: برطانوی فوجیوں کی ہلاکتوں کی تعداد تین سو ہو گئی

بارہ جون کو افغان صوبے ہلمند میں زخمی ہونے والا ایک برطانوی فوجی اتوار کو برمنگھم کے ایک ہسپتال میں دم توڑ گیا، اس طرح افغان جنگ کے دوران مارے جانے والے برطانوی فوجیوں کی تعداد تین سو ہو گئی۔

default

افغانستان میں گزشتہ نو سال کے دوران طالبان باغیوں کے مختلف حملوں میں یہ فوجی ہلاک ہوئے۔ برطانوی وزارت دفاع نے پیر کے روز ان اعداد و شمارکی تصدیق کی۔

وزارت دفاع کی طرف سے جاری کئے گئے ایک بیان میں کہا گیا ہے کہ 40کمانڈو رائل مرینز سے تعلق رکھنے والا ایک برطانوی فوجی نیو کوئین ایلزبتھ ہسپتال میں اپنے زخموں کی تاب نہ لاتے ہوئے چل بسا۔ یہ فوجی بارہ جون کو ہلمند کے ضلع سنگن میں طالبان باغیوں کے ایک حملے میں زخمی ہو گیا تھا۔

David Cameron

برطانوی وزیر اعظم ڈیوڈ کیمرون نے ایک اور فوجی کی ہلاکت پر دکھ کا اظہار کیا ہے

اس فوجی کی ہلاکت پر برطانوی وزیراعظم ڈیوڈ کیمرون نے کہا:’’ہم اپنے ملک اوراس دنیا کو محفوظ بنانے کے لئے ایک بڑی قیمت ادا کر رہے ہیں۔‘‘ انہوں نے مزید کہا کہ برطانوی عوام کو اپنی فوج پر فخر کرنا چاہئے۔’’ہم افغانستان میں اس لئے ہیں کیونکہ افغان ابھی تک تیارنہیں ہیں کہ وہاں ڈیرہ جمائے ہوئے دہشت گردوں کوملک سے باہر نکال پھینکیں۔‘‘ برطانوی فوج کے ایک ترجمان نے کہا ہے کہ اس فوجی کی خدمات ہمیشہ یاد رکھی جائیں گی۔

افغانستان میں تعینات تقریباً دس ہزار برطانوی فوجی طالبان عسکریت پسندوں کے خلاف بر سرپیکار ہیں۔ افغانستان میں غیرملکی افواج کی تعیناتی کے حوالے سے امریکہ کے بعد برطانیہ دوسرا سب سے بڑا ملک ہے۔

دوسری طرف افغان صدر حامد کرزئی کے دفترسے جاری کردہ ایک بیان میں اس برطانوی فوجی کی ہلاکت پر افسوس کا اظہار کیا گیا اور افغانستان میں برطانوی افواج کی ’’خدمات کا شکریہ‘‘ ادا کیا گیا۔

رپورٹ: عاطف بلوچ

ادارت: گوہر نذیر گیلانی

DW.COM