1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

حالات حاضرہ

افغانستان میں پاکستانی قونصل خانے کے ملازم کا قتل

افغان صوبے ننگرہار میں قائم پاکستانی قونصلیٹ کے ایک ملازم کو ہلاک کر دیا گیا ہے۔ اس پاکستانی شہری کو نامعلوم مسلح افراد نے گولیاں مار کر قتل کیا۔

مشرقی افغان صوبے ننگرہار کے گورنر کے ترجمان عطا اللہ خوگیانی نے نیوز ایجنسی ایسوسی ایٹڈ پریس سے گفتگو کرتے ہوئے پاکستانی قونصل خانے کے ايک ملازم کو ہلاک کر دیے جانے کی تصدیق کی ہے۔ پاکستانی ذرائع ابلاغ پر مقتول ملازم کا نام نیر اقبال بتایا گیا ہے۔

ترجمان عطا اللہ خوگیانی نے اس واقعے کی تفصیلات نہیں بتائی ہیں۔ صرف اتنی معلومات پر اکتفا  کیا کہ وہ جلال آباد شہر کے کسی بازار میں خریداری کے لیا گیا ہوا تھا۔

Afghanistan Reisepass (Getty Images/AFP/A. Majeed)

مقتول ملازم پاکستانی قونصل خانے میں افغان شہریوں کو ویزا جاری کرنے کے شعبے میں متعین تھا

دوسری جانب پاکستانی میڈیا کے مطابق مقتول نیر اقبال شام کی نماز پڑھ کر گھر لوٹ رہا تھا کہ راستے میں اُسے گولیاں مار دی گئیں۔ اطلاعات کے مطابق مقتول کو حملہ آوروں کی کم از کم چھ گولیاں لگی تھیں۔ اُس کی لاش کو شہر کے ہسپتال میں پوسٹ مارٹم کے لیے پہنچا ديا گیا ہے۔

تاحال کسی بھی گروپ نے اس قتل کی ذمہ داری قبول نہیں کی ہے۔

نیر اقبال جلال آباد کے پاکستانی قونصل خانے کے ویزا دفتر میں متعین تھا۔ اُس کا تعلق پاکستانی شہر سیالکوٹ سے بتایا گیا ہے۔

جلال آباد میں قائم پاکستانی قونصل خانے کی جانب سے اپنے ملازم کی ہلاکت پر کوئی ردعمل سامنے نہیں آیا ہے۔

DW.COM