1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

حالات حاضرہ

افغانستان میں شدید برفباری: درجنوں ہلاکتیں، کئی شاہراہیں بند

افغانستان کے کئی علاقوں میں شدید نوعیت کے برفانی طوفانوں کے نتیجے میں درجنوں شہری ہلاکتوں اور کئی بڑی قومی شاہراہوں کی بندش کے بعد کابل حکومت نے آج اتوار پانچ فروری کے روز عام تعطیل کا اعلان کر دیا۔

افغان دارالحکومت کابل سے ملنے والی نیوز ایجنسی روئٹرز کی رپورٹوں میں بتایا گیا ہے کہ کابل شہر اس وقت برف کی ایک موٹی تہہ کے نیچے دبا ہوا ہے اور حکومت نے صورت حال کو دیکھتے ہوئے ایک روزہ عوامی تعطیل کا اعلان کر دیا اور تمام حکومتی دفاتر بند کر دیے گئے۔

ہندو کش کی اس ریاست میں انتہائی شدید سردی اور مسلسل برفباری سے ملک کے جو حصے سب سے زیادہ متا‌ثر ہوئے ہیں، ان میں شمالی صوبہ بدخشاں بھی شامل ہے، جہاں گزشتہ دو دنوں کے دوران برفانی تودے گرنے کے متعدد واقعات میں مجموعی طور پر 19 افراد ہلاک اور 17 زخمی ہو چکے ہیں۔

چترال میں برفانی تودہ گرنے سے تیرہ افراد ہلاک

بدخشاں کے صوبائی گورنر کے ترجمان نے بتایا کہ اس صوبے میں شہری ہلاکتوں اور عام لوگوں کے زخمی ہونے کے یہ واقعات اس وقت پیش آئے جب مختلف علاقوں میں برفانی تودے رہائشی علاقوں پر گرے یا پھر برفباری کی وجہ سے کئی مکانوں کی چھتیں گر گئیں اور سڑکوں پر بہت سے حادثات بھی ہوئے۔

Afghanistan Starke Schneefälle (Getty Images/AFP/S. Marai)

ایک بزرگ افغان شہری کابل کی ایک سڑک سے برف ہٹاتے ہوئے

Afghanistan Winter & Schnee in Kabul | Dach, Schneeschippe (Reuters/O. Sobhani)

پورا کابل شہر اس وقت برف کی بہت موٹی تہہ سے ڈھکا ہوا ہے

صوبائی گورنر کے ترجمان کے مطابق صرف بدخشاں میں ہی کم از کم 12 اضلاع اس مسلسل برفباری سے بری طرح متاثر ہوئے ہیں اور ان اضلاع کا باقی ماندہ صوبے اور ملک سے رابطہ مکمل طور پر منقطع ہو چکا ہے۔

روئٹرز نے لکھا ہے کہ اس شدید برفباری نے افغانستان میں کئی اہم قومی شاہراہوں کو بھی بری طرح متاثر کیا ہے۔ ملکی دارالحکومت کابل کو قندھار سے ملانے والی شاہراہ پر پولیس اور فوج کے اہلکاروں کو کم از کم ڈھائی سو ایسی گاڑیوں اور بسوں میں سوار سینکڑوں افراد کی مدد کرنا پڑ گئی، جو دوران سفر برفانی طوفان میں پھنس کر رہ گئے تھے۔

اسی طرح افغان صوبے غزنی میں گورنر کے ترجمان جاوید سالنگی نے بتایا کہ اس صوبے میں دو میٹر تک نئی برفباری ریکارڈ کی گئی ہے۔ سالنگی نے کہا، ’’برفانی طوفان میں پھنسے افراد میں سے کچھ کو قریبی مقامی آبادیوں میں عام شہریوں کے گھروں میں پہنچایا گیا جبکہ باقی کو کچھ دور فوجی اور پولیس چیک پوسٹوں میں پناہ دی گئی۔‘‘

Afghanistan Winter & Schnee in Kabul | Dach, Geschäft (Reuters/O. Sobhani)

کابل کے مضافات میں ایک دکان کی چھت سے برف ہٹانے کی کوشش

Afghanistan Starke Schneefälle (Getty Images/AFP/S. Marai)

افغان دارالحکومت کی ایک سڑک کا اتوار پانچ فروری کی دوپہر کے وقت کا منظر

حکام نے توقع ظاہر کی ہے کہ برفباری کی وجہ سے بند افغان شاہراہیں جلد از جلد دوبارہ کھولی جا سکیں گی۔ ’’لیکن یہ شاہراہیں اسی وقت دوبارہ کھولی جائیں گی، جب سڑکیں صاف ہوں گی اور سفر کرنا دوبارہ محفوظ ہو جائے گا۔‘‘

اسی دوران کابل کے شمال میں درہ سالانگ بھی مسلسل برفباری کی وجہ سے بند کر دیا گیا ہے۔ اس علاقے میں پولیس فورس کے سربراہ جنرل رجب سالنگی نے بتایا کہ اس درے میں کئی مقامات پر تو دو سے لے کر ڈھائی میٹر تک برف پڑی ہے۔

DW.COM