1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

حالات حاضرہ

افغانستان میں سلسلہ وار بم دھماکے، ستائیس افراد ہلاک

افغانستان میں مختلف پرتشدّد واقعات اور پے در پے بم دھماکوں کے نتیجے میں کم از کم ستائیس افراد ہلاک ہوگئے ہیں، جن میں زیادہ تر عام شہری ہیں۔

default

افغانستان میں حالیہ ہفتوں کے دوران کشیدگی میں ا ضافہ ہوگیا ہے

پیر کے روز ہونے والے ان بم دھماکوں میں مشرقی لغمان صوبے کے میئر بھی ہلاک کر دیے گئے ہیں۔

سڑک کے کنارے نصب ایک بم کے پھٹنے سے چار عورتوں اور دو بچّوں سمیت بارہ افراد ہلاک ہو گئے۔ یہ افراد زابل صوبے کے شاملوزئی ضلعے میں ایک ٹریکٹر پر سوار تھے جب وہ اس بم کا نشانہ بنے۔ شاملوزئی کے ضلعی ناظم محمّد وزیر کے مطابق یہ بم طالبان نے نصب کیا تھا۔

Hamid Karzai PK in Kabul

افغان صدر حامد کرزئی نے صدارتی انتخابات کے لیے باضابطہ طور پر اپنی رجسٹریشن کرادی ہے

ایک اور واقعے میں طالبان عسکریت پسندوں نے گھات لگا کر ایک سیکیورٹی فرم کے قافلے پر حملہ کیا، جس میں فرم کے چھ افغان سیکیورٹی گارڈز اور قریب موجود دو شہری ہلاک ہوئے۔

قبل ازیں پیر ہی کے روز لغمان کی میونسپلٹی کی عمارت کے گیٹ پر ایک نوجوان خودکش حملہ آور نے خود کو بم سے اڑا لیا، جس میں میئر سمیت سات افراد کو جان سے ہاتھ دھونا پڑے۔

Abdullah Gul mit Asif Ali Zardari und Hamid Karzai

افغان صدر کرزئی اور پاکستانی صدر زرداری ترک صدر عبداللہ گل کے ساتھ


واضح رہے کہ یہ اطلاعات زیادہ تر افغان حکّام کی جانب سے سامنے آئی ہیں اور طالبان نے ان کی تصدیق یا تردید نہیں کی ہے۔

دوسری جانب پیر کو ہی افغان صدر حامد کرزئی نے صدارتی انتخابات کے لیے باضابطہ طور پر اپنی رجسٹریشن کرادی ہے۔ افغان انتخابی کمیشن نے یہ انتخابات بیس اگست کو کرانے کا اعلان کیا ہے۔

دریں اثناء حامد کرزئی امریکی صدر باراک اوباما کی جانب سے بدھ کے روز بلائے گئے پاک افغان اجلاس میں شرکت کے لیے واشنگٹن روانہ ہوگئے ہیں۔ اس اجلاس میں پاکستانی صدر آصف علی زرداری بھی شرکت کریں گے۔ اجلاس میں امریکی صدر کی نئی افغان پالیسی زیرِ غور آئے گی۔ اس پالیسی میں افغانستان کے مسئلے کے حوالے سے پاکستان کو ایک کلیدی حیثیت حاصل ہے۔