1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

معاشرہ

افغانستان میں جرمن طالب علم گرفتار

امریکی فوجیوں نے افغانستان میں ایک جرمن طالب علم حدید کو گرفتار کر لیا ہے۔ جرمن اخبار ’ذوڈ ڈوئچے‘ کے مطابق اس 23 سالہ سٹوڈنٹ کو بگرام کی فوجی جیل میں رکھا گیا ہے۔

default

دوسری جانب جرمن دفتر خارجہ کی طرف سے بتایا گیا ہے کہ یہ معاملہ اس دفتر کے علم میں ہے اور وہ اس جرمن شہری تک رسائی حاصل کرنے کے لیے امریکی ایجنسیوں کے ساتھ رابطے میں ہے۔ اخبار کے مطابق گرفتار ہونے والا افغانی نژاد یہ جرمن طالب علم فرینکفرٹ کا رہائشی ہے۔

اسے آٹھ جنوری کو کابل میں اس کے والد کے گھر سے دہشت گردی کے الزام میں گرفتار کیا گیا تھا۔ فرینکفرٹ میں اس کے اہل خانہ نے اس بات کی تردید کی ہے کہ حدید کسی بھی دہشت گردانہ کارروائی میں ملوث ہے۔ ان کے مطابق حدید کا افغانستان جانے کا مقصد صرف اور صرف اپنے والد سے ملاقات کرنا تھا۔

اخبار کے مطابق حدید کے اہل خانہ نے جرمن سکیورٹی ایجنسیوں پر الزام عائد کیا ہے کہ وہ حدید کی گرفتاری میں ملوث ہیں۔ دوسری جانب انسداد جرائم کے وفاقی ادارے BKA کی طرف سے یقین دہانی کرائی گئی ہے کہ اس کی طرف سے کسی بھی قسم کی کوئی معلومات کسی غیر ملکی ادارے کو مہیا نہیں کی گئیں۔ اخبار کے مطابق جولائی 2010ء میں فرینکفرٹ میں سرکاری دفتر استغاثہ کی طرف سے مبینہ طور پر دہشت گردی میں ملوث ہونے پر حدید کے خلاف ایک درخواست دائر کی گئی تھی۔ اس پر الزام عائد کیا گیا تھا کہ وہ پاکستان میں دہشت گردی کی تربیت حاصل کرنا چاہتا ہے۔

رپورٹ: امتیاز احمد

ادارت: مقبول ملک

DW.COM