1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

حالات حاضرہ

افغانستان سے نکلنے والے امریکی فوجیوں کی تعداد کا اعلان جلد متوقع

امریکی وزیر دفاع رابرٹ گیٹس نے گزشتہ روز قندھارمیں امریکی فوجی اڈے میں ایک خطاب کرتے ہوئے کہا کہ امریکی صدر باراک اوباما افغانستان متعینہ اپنے فوجیوں کی تعداد کے بارے میں ایک طویل مدتی منصوبہ تیار کر رہے ہیں۔

default

افغانستان متعینہ جرمن فوج پر حملوں میں کچھ عرصے سے اضافہ ہوا ہے

پینٹاگون کے چیف کے عہدے سے دست بردار ہونے سے پہلے رابرٹ گیٹس نے پہلی بار یہ بیان اپنے افغانستان کے الوداعی دورے کے دوران دیا۔ قندھار میں اپنے فوجیوں سے خطاب کے دوران انہوں نے کہا کہ صدر اوباما بہت جلد یہ اعلان کرنے والے ہیں کہ آئندہ ماہ افغانستان سے کتنے امریکی فوجی اپنے ملک لوٹیں گے۔ جولائی میں ہی بین الاقوامی فوج ملک کے سات مختلف علاقوں کی سکیورٹی کی ذمہ داری افغان آرمی کے سپرد کر دے گی۔ اطلاعات کے مطابق امریکی فوج کے انخلاء کے پہلے مرحلے میں افغانستان چھوڑنے والے فوجیوں کی تعداد چند ہفتے پہلے تک کے منصوبوں سے زیادہ ہو سکتی ہے۔

Afghanistan Nordallianz Taliban Flash-Galerie

افغانستان کی صورتحال ہنوز کشیدہ

مجوزہ منصوبے کے مطابق 2014 ء کے اواخر تک افغانستان سے تمام غیر ملکی جنگی دستوں کے انخلاء کا عمل مکمل ہو جائے گا۔ افغانستان کے اپنے بارہویں اور آخری دورے پر امریکی وزیر دفاع نے کہا ’اس وقت دو اہم معاملات غور طلب ہیں۔ ایک یہ کہ جولائی کے ماہ میں کتنے امریکی فوجیوں کو افغانستان سے ملک واپس بھیجا جائے گا۔ دوسرے یہ کہ ان فوجیوں کے انخلاء کے بعد افغانستان میں سکیورٹی کی کیا صورتحال پیدا ہوگی‘۔ تاہم گیٹس نے امید ظاہر کی کہ اس سلسلے میں نہایت ذمہ دارانہ فیصلہ کیا جائے گا۔ انہوں نے کہا کہ اُن کے امریکہ لوٹتے ہی ان معاملات پر بات چیت کے امکانات ہیں۔

امریکہ میں عوامی سطح پرافغانستان کی جنگ کی مخالفت میں روز بروز اضافہ ہو رہا ہے۔ ساتھ ہی کانگریس میں بھی اس بارے میں اب بے چینی بڑھتی جا رہی ہے۔ ان حالات میں صدراوباما پر افغانستان سے واپس اپنے ملک بلائے جانے والےامریکی فوجیوں کی تعداد کے بارے میں فیصلے کا دباؤ بھی غیر معمولی حد تک بڑھ گیا ہے۔ گزشتہ ماہ پاکستان میں چھپے ہوئے القاعدہ کے لیڈر اسامہ بن لادن پر اسپیشل امریکی فورس SEALs کے حملے کے بعد سے امریکی فوج کے جلد اور بڑی تعداد میں انخلاء کا مطالبہ بڑھتا جا رہا ہے۔ اُس امریکی آپریشن میں اسامہ بن لادن مارا گیا تھا۔

Afghanistan Präsident Karsai USA Verteidigungsminister Gates

امریکی وزیر دفاع رابرٹ گیٹس بارہویں دورے پر گزشتہ ہفتے کے روز افغانستان پہنچے تھے

پیر کو نیویارک ٹائمز میں چھپنے والی ایک رپورٹ کے مطابق وائٹ ہاؤس میں امریکی قومی سلامتی کے امور سے متعلق مشیروں کا افغانستان سے فوجی انخلاء کے بارے میں صلاح و مشورہ جاری ہے۔ اطلاعات کے مطابق بن لادن کی ہلاکت کے بعد گزشتہ چند ہفتوں کے دوران امریکی فوج کے انخلاء کے سلسلسے میں فوجیوں کی جتنی تعداد کے بارے میں بات چیت کی جا رہی تھی، اُس سے کہیں زیادہ تعداد میں امریکی فوجیوں کو واپس بلانے کے بارے میں امریکی حکام غورو خوض کر رہے ہیں۔ امریکی صدر ماہ رواں میں فوجی انخلاء کے بارے میں حتمی اعلان قوم سے اپنے خطاب کے دوران کریں گے۔

رپورٹ: کشور مصطفیٰ

ادارت: امجد علی

DW.COM

ویب لنکس