1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

حالات حاضرہ

افغانستان: خود کش حملے میں پانچ ایساف فوجی ہلاک

مشرقی افغانستان میں واقع ایک آرمی بیس پر طالبان عسکریت پسندوں کے ایک خود کش حملے میں پانچ غیر ملکی فوجیوں سمیت چار افغان فوجی اہلکاروں کی ہلاکت کی تصدیق کی گئی ہے۔

default

گزشتہ برس دسمبر سے لے کر اب تک انتہاپسند طالبان عسکریت پسندوں کا غیر ملکی فوجیوں پر کیا جانے والا یہ بدترین حملہ ہے۔ دسمبر کے ایک حملے کے دوران چھ نیٹو اور دو افغان فوجی ہلاک ہوئے تھے۔ ہفتہ کے روز یہ حملہ صوبہ لغمان میں جلال آباد شہر کے مغرب میں واقع ایک فوجی اڈے پر کیا گیا۔ خود کش حملہ آور فوجی وردی میں ملبوس تھا۔

ایساف (ISAF) فورسز کے کی طرف سے جاری کردہ ایک بیان میں کہا گیا ہے، ’’ آج مشرقی افغانستان میں عسکریت پسندوں کے ایک حملے میں پانچ ایساف اہلکار ہلاک ہوگئے ہیں۔‘‘

تاہم ہلاک ہونے والے فوجیوں کی شہریت اور نام ظاہر نہیں کیے گئے۔

افغان وزارت دفاع کی طرف سے جاری کیے گئے ایک علیحدہ بیان میں چار افغان فوجیوں کے

Afghanistan Selbstmordattentäter sprengt sich und vollbesetzten Armeebus in die Luft

گزشتہ روز افغان صوبے قندھار میں ہونے والے ایک خود کش حملے میں قندھار پولیس کے سربراہ ہلاک ہوئے تھے

ہلاک اور آٹھ دوسرے افراد کے زخمی ہونے کی تصدیق کی گئی ہے، زخمیوں میں چار مترجم بھی شامل ہیں۔

طالبان کے ترجمان ذبیح اللہ مجاہد نے خبر رساں ادرے اے ایف پی کو ٹیلفون پرحملے کی ذمہ داری قبول کی اطلاع دی۔

ایساف کے ایک ترجمان میجر ٹم جیمز نے بتایا ہے کہ حملے کے وقت ایک سو سے زائد نیٹو فوجی وہاں موجود تھے۔ افغانستان کے شورش زدہ علاقوں کے اندرحالیہ دنوں میں عسکریت پسندوں کے حملوں میں مسلسل اضافہ دیکھنے میں آ رہا ہے۔ حکام کے مطابق صرف گزشتہ چند دنوں میں عسکریت پسندوں کی طرف سے کم از کم نو حملے کیے گئے ہیں۔

گزشتہ روز افغانستان کے صوبے قندھار میں ہونے والے ایک خود کش حملے میں صوبائی پولیس کے سربراہ خان محمد مجاہد ہلاک ہو گئے تھے۔ ان پر اس سے پہلے بھی کئی حملے کیے جا چکے ہیں۔ رواں برس افغانستان میں 120 سے زائد غیر ملکی فوجی مارے جا چکے ہیں۔ افغانستان میں اس وقت تقریباﹰ ایک لاکھ تیس ہزار غیر ملکی فوجی تعینات ہیں، جن میں سے دو تہائی تعداد امریکی فوجیوں کی ہے۔

Kabul Anschlag Flughafen Terror Taliban

رواں برس افغانستان میں 120 سے زائد غیر ملکی فوجی مارے جا چکے ہیں

یاد رہے کہ ملک کے سات نسبتاﹰ پر امن علاقوں سے بین الاقوامی فوجیوں کا انخلاء رواں برس جولائی سے شروع کیا جائے گا۔ غیر ملکی افواج سن 2014 تک افغانستان سے انخلا کا ارادہ رکھتی ہیں۔ انخلا کے بعد ملکی سکیورٹی کی ذمہ داریاں افغان سکیورٹی فورسز کے حوالے کر دی جائیں گی۔

دوسری جانب امریکی وزیر خارجہ ہیلری کلنٹن نے جمعرات کے روز برلن میں نیٹو کے وزرائے خارجہ کی میٹنگ میں خبردار کیا ہے کہ افغانستان آپریشن میں شامل ممالک کو وہاں سے ’سیاسی مصلحت‘ کی وجہ سے نکلنے میں جلدی نہیں کرنی چاہیے۔ ان کہنا تھا کہ وہاں سے جلدی میں نکلنے کی بات ’محدود سیاسی سوچ‘ ہے۔

دریں اثناء مغربی افغان صوبے فرح میں سڑک کنارے رکھے ایک بم پھٹنے کے واقعہ میں کم از کم دو افراد کے ہلاک ہونے کی مقامی حکام نے تصدیق کی ہے۔ ان ہلاک شدگان میں ایک بچہ شامل ہے۔

رپورٹ: امتیاز احمد

ادارت: عابد حسین

DW.COM