1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

حالات حاضرہ

افغانستان بھر میں پَے در پَے کئی پُر تشدد واقعات

آج کابل میں افغان وزارت دفاع کی عمارت کو نشانہ بنایا گیا ہے۔ طالبان کے مطابق اِس حملے کا نشانہ افغانستان کے دورے پر آئے ہوئے فرانسیسی وزیر دفاع تھے۔ صوبہ غزنی میں سڑک کنارے نصب ایک بم پھٹنے سے چھ افغان فوجی ہلاک ہو گئے۔

default

کابل میں صدارتی محل کے نزدیک واقع وزارت دفاع کی اس عمارت کے اندر ہونے والے اس حملے میں دو افغان فوجی ہلاک جبکہ سات شدید زخمی ہو گئے ہیں۔ وزارت دفاع کے ایک ترجمان کے مطابق خود کُش حملہ آور فوجی وردی میں ملبوس تھا اور اس کے پاس ڈیفنس ملٹری پاس بھی تھا۔ ترجمان کے مطابق حملہ آور نے بارودی مواد سے بھری ایک خودکش جیکٹ پہن رکھی تھی اور اس سے پہلے کہ وہ خود کو اڑاتا، اُسے ہلاک کر دیا گیا تھا۔

طالبان نے اس حملے کی ذمہ داری قبول کرتے ہوئے کہا ہے کہ حملہ آوروں کا ہدف فرانسیسی وزیر دفاع Gerard Longuet تھے، جو ان دنوں افغانستان کے دورے پر ہیں۔ فرانسیسی ملٹری کے ایک ترجمان ان خبروں کی تردید کرتے ہوئے کہا ہے کہ وزیر دفاع حملے کے وقت عمارت میں موجود نہیں تھے۔

Afghanistan Anschlag April 2011

ایک افغان اہلکار وزارت دفاع کی عمارت کے سامنے سکیورٹی کی صورتحال پر نظر رکھ ہوئے ہے

افغان آرمی کے ترجمان محمد اعظمی نے خبر رساں ادارے اے ایف پی کو بتایا کہ فوجی وردی میں ملبوس ایک اہلکار نے اندھا دھند فائرنگ شروع کر دی تھی، جس کے نتیجے میں دو اہلکار ہلاک اور سات زخمی ہوئے ہیں۔ حملے کے فوری بعد وہاں پر موجود دوسرے اہلکاروں نے اسے ہلاک کر دیا۔ ایک اعلیٰ افغان اہلکار نے نام ظاہر نہ کرنے کی شرط پر اے ایف پی کو بتایا ہے کہ تین عسکریت پسند عمارت میں داخل ہونے میں کامیاب ہوئے تھے اور تینوں کو ہلاک کر دیا گیا ہے۔

افغان وزارت دفاع کی اطلاعات کے مطابق زخمی ہونے والوں میں سے ایک وزیر دفاع کے نائب اور دوسرے افغانستان کے آرمی چیف آف اسٹاف کے سیکرٹری ہیں۔

دوسری جانب مرکزی افغانستان کے صوبے غزنی میں آج پیر کو سڑک کے کنارے نصب ایک بم کے دھماکے میں چھ پولیس اہلکار ہلاک ہو گئے۔ مقامی پولیس چیف نے اس واقعے کی تصدیق کرتے ہوئے کہ ہلاک ہونے والے پولیس اہلکار ڈسٹرکٹ خوگیانی سے غزنی کے پولیس ہیڈ کواٹر کی طرف آ رہے تھے کہ سڑک کے کنارے نصب ایک بم کے پھٹنے سے ہلاک ہو گئے۔

Frankreich Libyen NATO Verteidigungsminister Gerard Longuet in Paris

حملہ آوروں کا ہدف فرانسیسی وزیر دفاع Gerard Longuet تھے

رواں مہینہ افغان اور نیٹو فورسز کے لئےانتہائی خطرناک ثابت ہوا ہے۔ گزشتہ جمعہ کو افغانستان کے صوبے قندھار میں ہونے والے ایک خود کش حملے میں صوبائی پولیس کے سربراہ خان محمد مجاہد ہلاک ہو گئے تھے جبکہ ہفتہ کو ایک ہی دن میں آٹھ نیٹو فوجی مارے گئے تھے۔

گزشتہ برس کم از کم 711 غیر ملکی فوجی طالبان عسکریت پسندوں کے حملوں میں مارے گئے تھے۔ رواں برس ابھی چوتھا مہینہ جاری ہے کہ اتحادی افواج کے کم از کم 128 فوجی ہلاک ہو چکے ہیں۔ طالبان کی طرف سے زیادہ تر حملے موسم گرما میں کئے جاتے ہیں،جس کا ابھی آغاز ہوا ہے۔

دوسری جانب آج صوبہ پروان میں ایک مبینہ دہشت گرد کی گرفتاری کے خلاف احتجاجی مظاہرے کے دوران افغان سکیورٹی اہلکاروں کی فائرنگ سے تین افراد ہلاک اور 25 زخمی ہو گئے۔ مظاہرے میں تین ہزار افراد شریک تھے۔ افغان اور نیٹو فورسز نے دہشت گردی کے الزام میں تین افغان شہریوں کو گرفتار کیا تھا، جن میں سے دو کو اتوار کے روز رہا کر دیا گیا تھا۔

رپورٹ: امتیاز احمد

ادارت: عدنان اسحاق

DW.COM