1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

حالات حاضرہ

اطالوی وزیر خارجہ پاؤلو جینٹی لونی نئے وزیراعظم نامزد

اٹلی کے صدر سرجیو ماٹاریلا نے قائم مقام وزیراعظم ماتیو رینزی کے وزیر خارجہ پاؤلو جینٹی لونی کو ملک کا نیا وزیراعظم نامزد کر دیا ہے۔

اطالوی صدر نے جینٹی لونی کو آج دوپہر ملاقات کے لیے بلایا تھا اور اِسی ملاقات میں اُن کو حکومت تشکیل دینے کی دعوت دی۔ اٹلی میں ماتیو رینزی نے چار دسمبر کے روز ہونے والے دستوری ریفرنڈم میں شکست کے بعد منصبِ وزارت عظمیٰ سے استعفیٰ دے دیا تھا۔

نامزدگی کے بعد جینٹی لونی کو پہلے مرحلے میں کابینہ تشکیل دینی ہے۔ وہ اپنی کابینہ کی لسٹ کے ساتھ صدر سے دوبارہ ملاقات کرتے ہوئے نئے منصب کا حلف اٹھائیں گے۔ حلف اٹھانے کے بعد نئے وزیراعظم کو پارلیمنٹ کے دونوں ایوانوں سے اعتماد کا ووٹ بھی حاصل کرنا ہوتا ہے۔

اگلے چار ایام میں حلف اٹھانے کی صورت میں پاؤلو جینٹی لونی جمعرات سے برسلز میں یورپی یونین کی سمٹ میں بطور وزیراعظم شریک ہو سکیں گے۔

وزیر اعظم نامزد ہونے کے بعد جینٹی لونی کا صحافیوں سے بات کرتے ہوئے کہنا تھا کہ وہ ’’ماتیو رینزی کے بنائے ہوئے فریم ورک میں رہتے ہوئے‘‘ کام کریں گے اور بہت جلد حکومت سازی کا کام شروع کر دیں گے۔

 ان کا مزید کہنا تھا، ’’میں جانتا ہوں کہ اٹلی کو جلد ایک با اختیار حکومت کی اشد ضرورت ہے۔‘‘

باسٹھ سالہ نامزد وزیر اعظم رینزی کی ڈیموکریٹک پارٹی کے ایک اہم رکن ہیں۔

Italian Premier Matteo Renzi winkt zum Abschied (picture-alliance/dpa/A. di Meo)

ماتیو رینزی

ریفرنڈم کے نتیجے میں ناکامی

رخصت ہونے والے وزیر اعظم رینزی کی انتظامیہ  کی جانب سے جو آئینی اصلاحات تجویز کی گئی تھیں ان کے مطابق اٹلی کی سینیٹ کے ممبران کی تعداد 315 سے کم کر کے 100 کی جانا تھی، جس سے سینیٹ کے اختیارات کم ہو جاتے۔ رینزی کو توقع تھی کہ اس اقدام سے ملک میں قانون سازی کی راہ میں حائل رکاوٹیں کم ہو جاتیں اور فیصلہ سازی کے عمل میں تیزی سے ملک ترقی کی راہ پر گام زن ہوتا۔ دوسری جانب رینزی کے مخالفین کا کہنا تھا کہ اگر مجوزہ آئینی اصلاحات منظور کر لی جاتیں تو وزیر اعظم کے اختیارات میں بہت اضافہ ہو جاتا۔

ماتیو رینزی کے استعفے کے اعلان کے بعد یورو زون کی مشترکہ کرنسی یورو کی قدر گزشتہ 20 ماہ کے دوران کی کم ترین سطح تک گِر  چکی ہے۔ ڈالر کے مقابلے میں یورو کی قدر 1.4 فیصد کمی کے بعد ایک یورو کی قیمت 1.0505 ڈالرز تک پہنچ گئی، تاہم فیصلے کے کچھ دیر بعد نسبتاً استحکام آنے کے بعد یہ قیمت 1.0555 ہو گئی۔ یورو کی قدر میں یہ کمی مارچ 2015ء کے بعد سے کم ترین سطح تھی جب ایک یورو کی قیمت 1.0457 ڈالر تک پہنچ گئی تھی۔