1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

حالات حاضرہ

اسٹراؤس کاہن ضمانت پر رہا، سخت پہرہ برقرار

بین الاقوامی مالیاتی فنڈ کے سابق سربراہ ڈومینیک اسٹراؤس کاہن کو جمعے کے روز ضمانت پر رہا کر دیا گیا ہے۔ ریکر جزیرے کی جیل سے گھر پر منتقل کیے جانے والے کاہن سخت پہرے میں رہیں گے۔

default

پولیس کے مطابق کاہن کو جیل سے نیویارک کی ایک عمارت میں منتقل کر دیا گیا ہے تاہم ان کے گھر کے باہر چوبیس گھنٹے پہرہ رہے گا، تاکہ کہیں وہ ملک سے فرار ہونے کی کوشش نہ کریں۔ نیویارک پولیس کا کہنا ہے کہ جنسی زیادتی کی کوشش کے الزام میں حراست میں لیے گئے اسٹراؤس کاہن کو ایک نجی سکیورٹی فرم کی نگرانی میں گراؤنڈ زیرو سے قریب واقع ایک عمارت میں رکھا گیا ہے۔

62 سالہ اسٹراؤس کاہن کی ضمانت کے لیے عدالت کی جج کی طرف سے سخت شرائط رکھی گئی ہیں۔ اسٹراؤس کاہن کو نیویارک کے ایک ہوٹل کی ملازمہ سے جنسی زیادتی کی کوشش کے الزام میں چار راتیں جیل میں گزارنا پڑی ہیں۔ اسٹراؤس کاہن کو ایک ملین ڈالر نقد اور پانچ ملین ڈالر انشورنس بانڈز کے عوض ضمانت ملی ہے۔ فوری طور پر کاہن کو ایک عارضی رہائش گاہ میں منتقل کیا گیا ہے تاہم مقدمے کی کارروائی کے دوران نیویارک ہی میں ٹھہرنے کے لیے وہ جلد ہی کسی اور مکان میں منتقل ہو جائیں گے۔

Dominique Strauss-Kahn Gericht IWF 19.05.

اسٹراؤس کاہن عدالت میں

دوسری جانب ترقی پذیر اور مغربی ممالک کے درمیان بین الاقوامی مالیاتی فنڈ کے نئے سربراہ کے تقرر کے لیے رسہ کشی جاری ہے۔ فرانس کی وزیرخزانہ Christine Lagarde اس دوڑ میں اس وقت سب سے آگے دکھائی دیتی ہیں تاہم ترقی پذیر ممالک کی طرف سے پوری کوشش کی جاری ہے کہ امریکہ اور یورپی ممالک کے درمیان اس حوالے سے کوئی بالواسطہ ڈیل نہ ہو پائے۔

Lagarde کو یورپی کرنسی کو لاحق بحران میں ان کی گرانقدر کاوشوں کی بدولت انتہائی اہم سمجھا جا رہا ہے۔ جرمن چانسلر انگیلا میرکل نے بھی برلن میں اپنی ایک پریس کانفرنس میں Christine Lagarde کی تعریف کرتے ہوئے کہا کہ وہ انہیں انتہائی قدر کی نگاہ سے دیکھتی ہیں۔

واضح رہے کہ دوسری عالمی جنگ کے بعد قائم ہونے والے بین الاقوامی مالیاتی فنڈ کی سربراہی اب تک صرف یورپ ہی کے پاس رہی ہے۔

رپورٹ : عاطف توقیر

ادارت : عاطف بلوچ

DW.COM

ویب لنکس

ملتے جلتے مندرجات