1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

حالات حاضرہ

اسرائیلی وزیراعظم امریکہ کے دورے پر

اسرائیلی وزیراعظم بینجمن نیتن یاہو آج اتوار کے روز یہودی رہنماؤں کی ایک کانفرنس میں شرکت کے لئے امریکہ پہنچ رہے ہیں۔ اپنے اس دورے میں وہ امریکی رہنماؤں سے بھی ملاقاتیں کریں گے۔

default

اس دورے کا مقصد امریکی رہنماؤں کو مشرق وسطیٰ امن عمل کے حوالے سے تفصیلات سے آگاہ کرنا ہے۔ نیتن یاہو شمالی امریکہ میں بسنے والے یہودیوں کی نیو اورلینز میں منعقدہ ایک سالانہ کانفرنس میں شرکت کریں گے۔

انہوں نے اسرائیلی پارلیمان سے اپنے تازہ خطاب میں بتایا تھا کہ وہ دورہء امریکہ کے دوران امریکی نائب صدر جو بائیڈن اور وزیرخارجہ ہلیری کلنٹن سے بھی ملاقاتیں کریں گے۔ ان کا کہنا تھا کہ وہ امریکی رہنماؤں کو مشرق وسطیٰ امن عمل اور فلسطینیوں کے ساتھ امن مذاکرات کی تفصیلات سے آگاہ کریں گے۔

اسرائیلی وزیر اعظم کے دفتر نے نیتن یاہو کے دورہء امریکہ کے دوران جو بائیڈن اور ہلیری کلنٹن سے ملاقاتوں کی تاریخ اور مقام کی تصدیق نہیں کی ہے تاہم کہا ہے کہ ممکنہ طور پر یہ ملاقاتیں نیویارک میں ہوں گی۔ نیتن یاہو نیویارک میں چار روز قیام کریں گے۔

نیتن یاہو امریکہ کا یہ دورہ ایک ایسے وقت میں کر رہے ہیں کہ جب اسرائیل کی قدرے زیادہ ہمدرد سمجھی جانے والی ریپبلکن پارٹی نے کانگریس کے انتخابات میں باراک اوباما کی ڈیموکریٹک پارٹی کو شکست دی ہے۔

NO FLASH Nahost Friedensgespräche in Washington

امریکی ثالثی میں شروع ہونے والے اسرائیلی فلسطینی براہ راست مذاکرات آغاز کے چند ہی روز بعد تعطل کا شکار ہو گئے تھے

امریکی محکمہء خارجہ کے نائب ترجمان مارک ٹونر نے اپنے ایک بیان میں کہا ہے کہ اوباما انتظامیہ مشرق وسطیٰ امن عمل کو بدستور اہم ترجیح کے طور پر دیکھتی رہے گی اور اس سلسلے میں کانگریس کے ساتھ مل کر کام کیا جائے گا۔

مبصرین کا خیال ہے کہ ریپبلکن جماعت کی ایوان نمائندگان میں برتری کے باعث صدر اوباما کی طرف سے اسرائیل پر امن مذاکرات کے لئے دباؤ میں خاصی کمی آئے گی۔

واضح رہے کہ اسرائیل اور فلسطینیوں کے درمیان براہ راست امن مذاکرات اپنے آغاز کے چند ہی روز بعد اس وقت منجمد ہو گئے تھے، جب اسرائیل نے مقبوضہ مغربی اردن میں نئی یہودی بستیوں کی تعمیر پر عائد عارضی پابندی کی مدت میں توسیع سے انکار کر دیا تھا۔

رپورٹ: عاطف توقیر

ادارت: امجد علی

DW.COM

ویب لنکس