1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

حالات حاضرہ

اسرائیلی فوج ظالم نہیں، بینجمن نیتن یاہو کی ترکی پر تنقید

اسرائیلی وزیراعظم بنیامن نیتن یاہو نے ترک ٹیلی ویژن پر اپنی فوج کی نہتے فلسطینی بچوں پر فائرنگ کی تصاویر دکھائے جانے پر تشویش ظاہر کی ہے۔

default

اسرائیلی وزیراعظم بن یامین نیتن یاہو

یروشلم میں صحافیوں سے بات چیت میں اسرائیلی وزیراعظم نے کہا کہ ترکی کے رویے میں تبدیلی سے انہیں تشویش لاحق ہے۔ انہوں نے امید ظاہر کی کہ انقرہ حکومت کی پالیساں قیام امن میں مددگار ثابت ہوں گی، دہشت گردی کے فروغ میں نہیں۔

ترکی کے سرکاری ٹیلی ویژن چینل ٹی آر ٹی پر جاری ایک نشریاتی سلسلے Palestinians in Love and in War یعنی، علیحدگی۔ فلسطینی محبت اور جنگ میں'' میں اسرائیلی فوج کو معصوم فلسطینی بچوں پر فائرنگ کرتے ہوے اور قہقہے لگاتے دکھا یاگیا ہے۔ یروشلم حکومت کی جانب سے اسی معاملے پر بطور احتجاج، ترک سفیر کی بھی اسرائیلی دفتر خارجہ میں طلبی ہوئی۔

Recep Tayyip Erdogan

ترک وزیراعظم رجب طیب اردگان

یاد رہے کہ ترکی اور اسرائیلی کے درمیان باضابطہ سفارتی تعلقات طویل عرصے سے قائم ہیں البتہ غزہ پٹی پر اسرائیلی حملے کے بعد سے تعلقات سردمہری اور تناو کا شکار چلے آرہے ہیں۔ حال ہی میں ترکی میں عالمی فضائی مشقیں منعقد ہونی تھیں جس میں امریکہ اور نیٹو کے بشمول اسرائیل کو بھی شرکت کرنا تھی۔ تاہم انقرہ حکومت نے اسرائیل کی شرکت پر اعتراض کیا جس پر امریکہ نے یہ مشقیں منسوخ کردیں۔ ان مشقوں میں اسرائیل کی شرکت پر اعتراض کو ترکی کی جانب سے غزہ حملے سے متعلق اسرائیل کے خلاف پہلے واضح اور عملی احتجاج کے طورپر دیکھا گیا۔

اس سے قبل جنوری میں عالمی اقتصادی فورم کے موقع پر ترک وزیراعظم رجب طیب اردوان نے اسرائیلی صدر شمون پیریز کی جانب سے غزہ حملے کا دفاع کرنے پر اسٹیج سے واک آوٹ کرکے احتجاج ریکارڈ کرایا تھا۔

Israel Angriff in Gaza Bet Hanun Kinder

اقوام متحدہ کی انسانی حقوق سے متعلق کونسل میں دسمبر اور جنوری کے غزہ حملے کی تحقیقات جاری ہیں

حالیہ ٹیلی ویژن پروگرام سے متعلق اسرائیلی حکومت نے خدشہ ظاہر کیا ہے کہ اس سے ترکی کا دورہ کرنے والے اسرائیلی سیاحوں پر حملے ہونے کے خدشات پیدا ہوگئے ہیں۔ اسرائیلی دفتر خارجہ سے جاری بیان میں کہا گیا کہ ان کی فوج کو بطور ظالم دکھائے جانے کو وہ کسی دشمن ملک میں بھی برداشت نہیں کرسکتے، ترکی تو دور کی بات ہے جس سے اسرائیل کے باضابطہ سفارتی تعلقات ہیں۔

یاد رہے کہ اقوام متحدہ کی انسانی حقوق سے متعلق کونسل میں دسمبر اور جنوری کے غزہ حملے کی تحقیقات جاری ہیں۔

رپورٹ شادی خان سیف

ادارت کشور مصطفیٰ