1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

کھیل

آسٹریلیا کے خلاف جیت پر پاکستان بھر میں جشن

آسٹریلیا کو پندرہ برس کے طویل عرصے کے بعد کسی ٹیسٹ میچ میں شکست دینے پر پاکستان بھر میں خوشیاں منائی جا رہی ہیں۔ پاکستان ٹیم کے کوچ وقار یونس نے جیت کے بعد نوجوان کھلاڑیوں کے بہتر مستقبل کی پیشین گوئی کی ہے۔

default

ٹیم کا مستقبل باصلاحیت نوجوان کھلاڑیوں کے ہاتھوں میں ہے: وقار یونس

وقار یونس نے ہیڈنگلے ٹیسٹ میچ میں جیت کے بعد کہا:’’آسٹریلیا جیسی با صلاحیت ٹیم کو ہرانا بڑا زبردست احساس ہے۔‘‘

Pakistan Sri Lanka Cricket Salman Butt

پاکستانی ٹیم کے ٹیسٹ کپتان سلمان بٹ نے اپنے پہلے ہی ٹیسٹ میچ میں کامیابی حاصل کی

کوچ یونس نے مزید کہا:’’یہ فتح ٹیم میں شامل نوجوان کھلاڑیوں کے لئے ایک اچھا آغاز ہے۔ میں امید کرتا ہوں کہ یہ کھلاڑی پاکستان کے لئے بہتر مستقبل کے ضامن ہوں گے۔‘‘اس جیت سے قبل پاکستانی ٹیم نے آسٹریلیا کو سن 1995ء میں سڈنی کے میدان پر ہرایا تھا۔ اُس میچ میں وقار یونس بھی شریک تھے۔

ٹیم میں شامل کئی نوجوان اور نا تجربہ کار کھلاڑیوں کی موجودگی کے باوجود پاکستان نے ہیڈنگلے ٹیسٹ میں آسٹریلیا جیسی طاقتور، مضبوط اور تجربہ یافتہ ٹیم کو ہفتے کے روز تین وکٹوں سے شکست دے دی۔

پاکستان کی موجودہ ٹیم میں محمد یوسف اور یونس خان جیسے تجربہ کار بیٹسمین شامل نہیں ہیں لیکن اس کمی کے باوجود نوجوان بلے بازوں نے ہمت، حوصلے، مثبت سوچ اور ہُنر کا زبردست مظاہرہ کیا اور وہ کر دکھایا جو گزشتہ پندرہ برس کے دوران ممکن نہیں ہو سکا تھا۔

Younis Khan Cricketspieler

یونس خان موجودہ پاکستان ٹیم میں شامل نہیں ہیں

انگلینڈ کے نیوٹرل وینیو پر آسٹریلیا کو ہرا دینے کی خبر کے کچھ ہی لمحوں بعد پاکستان کے بڑے شہروں میں خوشی کا عالم تھا۔ لوگوں نے موسیقی کی دھنوں پر رقص کرکے اس جیت کا بھرپور جشن منایا۔ پاکستان ٹیم کے جوشیلے اور جذباتی مداحوں نے سڑکوں اور گلیوں میں ڈرم بجائے، خوشی کے ترانے گائے اور اپنے دوستوں میں مٹھائیاں تقسیم کیں۔

آسٹریلیا نے پاکستان کو دو ٹیسٹ میچوں پر مشتمل اس سیریز کے پہلے میچ میں لارڈز کے میدان پر 150 رنز سے شکست دی تھی تاہم پاکستان نے دوسرے ٹیسٹ میں زبردست ’کَم بیک‘ کرکے لارڈز کی ہار کا بدلہ لے کر سیریز ایک ایک سے برابر کر دی۔ پاکستان نے ٹیسٹ سیریز سے قبل آسٹریلیا کو ٹی ٹوئنٹی سیریز میں دو صفر سے مات دی تھی۔

Cricket Test Match zwischen Indien und Australien

پاکستان کے ہاتھوں شکست کے بعد آسٹریلوی کپتان رکی پونٹنگ کو اپنے ملک میں مشکل سوالوں کا جواب دینا پڑے گا

پاکستان کے سابق کپتان آصف اقبال نے انگلینڈ کی ٹیم کو خبردار کیا کہ اب جلد ہی شروع ہونے والی چار میچوں پر مبنی ٹیسٹ سیریز میں اسے ہونہار پاکستانی بولرز کا سامنا کرنا پڑے گا۔

پاکستانی بولرز نے ہیڈنگلے ٹیسٹ میچ کی پہلی اننگز میں 88 کے معمولی سکور پر آل آوٴٹ کر دیا تھا جس کے بعد پاکستان نے اپنی پہلی اننگز میں 258 رنز بناکر 170 رنز کی انتہائی قیمتی برتری حاصل کی تھی۔ آسٹریلیا نے دوسری اننگز میں قدرے بہتر کھیل کا مظاہرہ کرتے ہوئے 349 رنز بنائے اور اس طرح پاکستان کے سامنے 180 کا ہدف رکھا۔ پاکستان نے سات وکٹوں کے نقصان پر اس ہدف کا کامیابی سے تعاقب کیا۔ پاکستانی نوجوان فاسٹ بولر محمد عامر اور آسٹریلوی آل راوٴنڈر شین واٹسن کو مشترکہ طور پر ہیڈنگلے ٹیسٹ کے بہترین کھلاڑی قرار پائے۔ عامر نے اس ٹیسٹ میچ میں سات جبکہ واٹسن نے چھ وکٹیں حاصل کیں۔

دریں اثناء پاکستانی صدر آصف علی زرداری اور وزیر اعظم یوسف رضا گیلانی نے پاکستان کرکٹ ٹیم کی شاندار کامیابی پر کھلاڑیوں کو مبارک باد پیش کی ہے۔

رپورٹ: گوہر نذیر گیلانی

ادارت: افسر اعوان

DW.COM