1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

فن و ثقافت

آرنلڈ شواٹزنیگر: گورنری سے اداکاری کی جانب

امریکی ریاست کیلیفورنیا کے آٹھ سال تک گورنر رہنے والے ہالی وڈ اداکارآرنلڈ شواٹزنیگر نے کہا ہے کہ وہ ایڈوینچر فلموں میں ایک بار پھر کام کرنے کے منتظر ہیں۔

default

ماضی کے معروف اداکار تریسٹھ سالہ شواٹزنیگر نے اسی ہفتے شائع ہونے والے اپنے ایک انٹرویو میں کہا،’ میں انٹرٹینمنٹ کی دنیا میں ایک مرتبہ پھر بہت آرام سے داخل ہو سکتا ہوں اور ایکشن فلموں میں کام کر سکتا ہوں ، جیسا کہ میں نے ہمیشہ کیا ہے‘۔

شواٹزنیگر کہتے ہیں کہ وہ ہمیشہ ہی لوگوں کو حیرت میں ڈال کر خوش ہوتے ہیں،’ مجھے فخر ہے کہ میں نے مختلف قسم کی فلموں میں کام کیا ہے۔ اور میں ان میں سے بہت سی فلموں کے مزید پارٹ بنانا چاہوں گا۔ ایسی فلمیں جو لوگ دیکھنا چاہیں۔ ان میں ٹوینز، کنڈر گارٹن کوپ، پریڈیٹر، ٹرمینیٹر یا ٹرو لائز شامل ہو سکتی ہیں۔‘

BdT Präsident Bush und Arnold Schwarzenegger an den Waldbränden in Kalifornien

شواٹزنیگر سابق امریکی صدر بش کے ہمراہ

شواٹزنیگر کے بقول کچھ لوگوں کو یہ اعتراض ہو سکتا ہے کہ وہ ایک ری پبلکن کےساتھ کیسے کام کریں گے لیکن میرے ساتھ ایک اچھی بات یہ ہے کہ میں کبھی نظریاتی طور پر پابندیوں کو شکار نہیں ہوا،’ میں نے بہت آرام کے ساتھ ڈیموکریٹس کے ساتھ کام کیا ہے اور میں نے انہیں کبھی ویلن نہیں سمجھا‘۔ آرنلڈ شواٹزنیگر کہتے ہیں کہ سٹیو شپیلبرگ اور ٹام ہینکس میرے ساتھ کام کرتے ہوئے اچھا محسوس کرتے ہیں۔

شواٹزنیگر کی آخری ہٹ فلم Terminator 3: Rise of the Machines تھی۔ 2003ء میں ریلز ہونے والی اس فلم نے 433 ملین ڈالر کا بزنس کیا تھا۔

تاہم دوسری طرف ناقدین یہ سوال بھی اٹھا رہیں کہ کیا عوام ایک عمر رسیدہ ہیرو کو پردہ سکرین پر دیکھنے کے لیے بے قرار ہیں یا نہیں۔ ایک سروے کے مطابق صرف تئیس فیصد عوام انہیں ہالی ووڈ کی فلم انڈسٹری میں دوبارہ سے جلوہ گر ہوتا دیکھنا چاہتے ہیں۔

رپورٹ: عاطف بلوچ

ادارت: عابد حسین

DW.COM