’آئی فونز اب بھارت میں بھی تیار ہوں گے‘ | سائنس اور ماحول | DW | 03.02.2017
  1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

سائنس اور ماحول

’آئی فونز اب بھارت میں بھی تیار ہوں گے‘

آئی فون بنانے والی مشہور امریکی کمپنی ایپل اب رواں برس سے بھارت میں بھی اپنے فونز کی تیاری شروع کر دے گی۔ بھارتی حکام کے مطابق ایپل کمپنی اپنے آئی فونز کو بھارت میں اسمبل کرنے پر تیار ہو گئی ہے۔

خبر رساں ادارے اے ایف پی نے بھارتی ریاست کرناٹک کے انفارمیشن ٹیکنالوجی اور بائیو ٹیکنالوجی کے وزیر پریانک گھڑگے کے حوالے سے تین فروری بروز جمعہ بتایا ہے کہ ایپل کمپنی نے بھارت میں اپنے آئی فونز کی تیاری پر رضا مندی ظاہر کر دی ہے اور آئندہ کچھ مہینوں میں اس حوالے سے عملی کام شروع کر دیا جائے گا۔ ناقدین کا کہنا ہے کہ ایپل کمپنی اس طرح بھارت میں بسنے والے ایک بڑے متوسط طبقے کو اپنی اس پراڈکٹ کی طرف مبذول کرانا چاہتی ہے۔

ایپل کا ’ایپلیکیشن ڈیویلمپنٹ سنٹر‘ اب بھارت میں
استعمال شدہ آئی فونز کی درآمد، بھارت نے ایپل کو روک دیا

آئی فون کی مارکیٹ، چین کے بعد ایپل کا رخ بھارت کی طرف

یہ امر اہم ہے کہ چین میں آئی فونز کی فروخت کی شرح میں کمی واقع ہوئی ہے اور اب ایپل اپنے آئی فونز کو بڑے پیمانے پر فروخت کرنے کے حوالے سے ایک نئی بڑی منڈی کی تلاش میں ہے۔ اپیل نے ابھی تک بھارت میں اپنے آئی فونز کی پروڈکشن شروع کرنے کے حوالے سے کوئی بیان جاری نہیں کیا ہے۔ بھارت میں اس وقت جنوبی کوریائی سام سانگ کمپنی کے اسمارٹ فونز کی بڑی مانگ ہے۔

ایپل کے چیف ایگزیکٹیو ٹم کک نے رواں ہفتے ہی کہا تھا کہ وہ سوا ارب کی آبادی والے ملک بھارت میں ’بڑے پیمانے پر سرمایہ کاری‘ پر غور کر رہے ہیں۔ کرناٹک کے انفارمیشن ٹیکنالوجی اور بائیو ٹیکنالوجی کے وزیر پریانک گھڑگے کے بقول رواں برس اپریل کے اواخر سے آئی فونز کی بنگلور میں پروڈکشن کا عمل شروع ہو سکتا ہے۔ انہوں نے کہا کہ بھارت میں اسمبل کیے جانے والے آئی فونز دراصل بھارتی مارکیٹ کے لیے ہی ہوں گے۔

نیوز ایجنسی اے ایف پی نے ریسرچ فرم  Canalys کے اعداد و شمار کے حوالے سے بتایا ہے کہ بھارت میں موبائل فونز کی منڈی میں ایپل کمپنی کا حصہ صرف دو فیصد بنتا ہے جبکہ اس کے مقابلے میں اس کی حریف کمپنی سام سانگ کا حصہ تئیس فیصد ہے۔

ابھی تک یہ واضح نہیں ہے کہ آیا بھارت میں آئی فونز کی تیاری سے مقامی سطح پر اس کی مقبولیت میں واقعی اضافہ ہو سکے گا تاہم ماہرین کا کہنا ہے کہ اگر یہ اسمارٹ فونز بھارت میں تیار کیے جائیں گے تو اس سے کمپنی کے اخراجات میں کمی ہو گی اور یوں بھارت میں یہ کم داموں پر دستیاب ہو سکیں گے۔ اس طرح امکان ہے کہ بھارت میں آئی فونز کی مانگ بڑھ سکتی ہے۔

DW.COM